خلیجی ممالک بات چیت کے ذریعہ اپنے باہمی اختلافات دور کریں: ہندوستان

Jun 10, 2017 04:07 PM IST | Updated on: Jun 10, 2017 04:07 PM IST

نئی دہلی۔  ہندوستان نے خلیجی ممالک کے بحران پر اپنا موقف واضح کرتے ہوئے آج کہا کہ عالمی امن و استحکام کے لئے سب سے بڑے خطرے بین الاقوامی دہشت گردی، مذہبی بنیاد پرستی سے انسانیت کو بچانے کے لیے تمام ممالک مل جل کر باہمی اختلافات دور کریں۔  وزارت خارجہ نے یہاں جاری ایک بیان میں یہ بھی کہا کہ ساحلی علاقے میں رہنے والے تقریبا 80 لاکھ تارکین وطن کی حفاظت کو لے کر وہ ان ممالک کے ساتھ مسلسل رابطے میں ہے۔ بیان میں کہا گیا کہ ہندوستان خلیج میں سعودی عرب اور دیگر ممالک کی جانب سے قطر سے سفارتی تعلقات توڑ لینے کے حالیہ فیصلے سے پیدا صورتحال پر گہری نظر رکھے ہوئے ہے۔ ہمارا خیال ہے کہ تمام فریقوں کو اپنے اختلافات کو تعمیری بات چیت کے ذریعے باہمی احترام اور خود مختاری کو یقینی بنانے اور اندرونی معاملات میں مداخلت نہ کرنے کی بین الاقوامی روایت کی بنیاد پر حل کیا جانا چاہیے۔ ہندوستان سمجھتا ہے کہ خلیج میں امن و سلامتی علاقائی ترقی اور خوشحالی کے لیے بہت اہم ہے۔ بین الاقوامی دہشت گردی، تشدد اور انتہا پسندی اور مذہبی عدم برداشت نہ صرف علاقائی استحکام کو بلکہ عالمی امن کے لئے سنگین خطرہ  ہے اور اس سے تمام ممالک کو مربوط اور جامع شکل سے لڑنا ہوگا۔

ہندوستان کے خلیجی ممالک کے ساتھ طویل عرصے سے دوستانہ تعلقات رہے ہیں ۔ 80 لاکھ سے زیادہ ہندوستانی ورکرس ان ممالک میں رہتے ہیں اور ان ممالک میں علاقائی امن و استحکام سے ہمارے مفادات بھی وابستہ ہیں۔ اس سلسلے میں حکومت پوری صورت حال پر گہری نظر رکھے ہوئے ہے اور ان ممالک کے مسلسل رابطے میں ہیں۔ بیان میں یہ بھی کہا گیا کہ ان ممالک میں رہنے والے ہندوستانی ورکرس کو مشورہ دیا گیا ہے کہ وہ ضرورت پڑنے پر قریب ترین ہندوستانی سفارت خانے یا قونصل خانے سے رابطہ کریں۔

خلیجی ممالک بات چیت کے ذریعہ اپنے باہمی اختلافات دور کریں: ہندوستان

سعودی پریس ایجنسی بذریعہ اے پی

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز