ہریانہ : مسلم نوجوان جنید کے قتل کے ملزم کو تین دن کی پولیس حراست میں بھیجا گیا ، برندا کرات کی متاثرہ کے اہل خانہ سے ملاقات

Jun 24, 2017 10:54 PM IST | Updated on: Jun 24, 2017 10:54 PM IST

نئی دہلی / بلبھ گڑھ : ہریانہ کے بلبھ گڑھ میں ٹرین میں مسلم کمیونٹی کے ایک نوجوان جنید کے قتل کے معاملے میں مقامی عدالت نے ایک ملزم کو تین دن کی پولیس حراست میں بھیج دیا ہے۔ پولیس نے بتایا کہ ملزم کو گورنمنٹ ریلوے پولیس (جی آر پی) نے گرفتار کیا ہے۔ اس کے بعد اسے آج مقامی عدالت نے پیش کیا گیا، جس نے اسے تین دن کی پولیس حراست میں بھیج دیا۔

پولیس کے ایک سینئر افسر نے کہا، "ہم مزید ثبوت جمع کرنے اور متاثرین سے موصولہ اطلاعات کی تصدیق کرنے کی کوشش کر رہے ہیں۔" ​​تاہم پولیس نے ملزم کی شناخت کرنے سے انکار کیا۔ اس واقعہ میں زخمی ہونے والے نوجوان ہاشم کو آل انڈیا انسٹی ٹیوٹ کے ٹراما سینٹر سے چھٹی دے دی گئی ہے جبکہ دوسرا زخمی نوجوان شاکر اب بھی ہسپتال میں داخل ہے۔

ہریانہ : مسلم نوجوان جنید کے قتل کے ملزم کو تین دن کی پولیس حراست میں بھیجا گیا ، برندا کرات کی متاثرہ کے اہل خانہ سے ملاقات

دریں اثنا، ورندا کرات، ممبرپارلیمنٹ محمد سلیم، سریندر ملک سمیت مارکسی کمیونسٹ پارٹی کے رہنماؤں کی ایک ٹیم نے جنید، شاکر اور ہاشم کے خاندانوں سے ملاقات کی۔ سی پی ایم کی ہریانہ یونٹ نے اس واقعہ کے سلسلے میں احتجاج کرنے کی دھمکی دی ہے۔

پولیس نے بتایا کہ جمعرات کی رات دہلی-متھرا ٹرین میں کچھ لوگوں نے سیٹ کو لے کر تنازعہ ہونے پر جنید پر حملہ کیا اور اس کا قتل کر دیا جبکہ اس کے دو بھائیوں کو زخمی کر دیا۔ یہ تمام عید کی خریداری کرنے کے بعد ٹرین سے دہلی سے فرید آباد ضلع میں اپنے گاؤں واپس آ رہے تھے۔ بلبھ گڑھ میں کچھ لوگ ان کی بوگی میں گھس گئے اور سیٹ کو لے کر ان سے جھگڑا کرنے لگے۔ واقعہ میں ہلاک کئے گئے نوجوان کی شناخت جنید (17) کے طور پر ہوئی جبکہ ہاشم (21) اور شاکر (23) شدید زخمی ہو گئے۔ جی آر پی نے قتل کا معاملہ درج کیا ہے۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز