آدھار معاملے میں مودی حکومت کو سپریم کورٹ کا نوٹس ، ممتا حکومت کو لگائی پھٹکار ، کہی یہ بات ؟

Oct 30, 2017 12:59 PM IST | Updated on: Oct 30, 2017 12:59 PM IST

نئی دہلی : سپریم کورٹ نے آدھار کو موبائل سےلنک کرنے کے مرکزی حکومت کے فیصلے کو چیلنج کرنے والی درخواست پر مغربی بنگال کی ممتا بنرجی حکومت کو آج سخت پھٹکار لگائی۔علاوہ ازیں سپریم کورٹ نے اس معاملہ میں مودی حکومت کو بھی نوٹس جاری کی اور چار ہفتوں میں جواب داخل کرنے کی ہدایت دی ہے ۔  جسٹس اے کے سیکری اور جسٹس اشوک بھوشن کی بینچ نے مغربی بنگال حکومت کی جانب سے کیس کی پیروی کر رہے سینئر وکیل کپل سبل کو بھی آڑے ہاتھوں لیا۔ جسٹس سیکری نے کہا کہ مسٹر سبل آپ خود ہی قابل قانون داں ہیں۔ کیا کوئی ریاستی حکومت پارلیمنٹ سے منظور شدہ قانون کو چیلنج کر سکتی ہے۔

انہوں نے کہا کہ یہ بہت حیرت کی بات ہے کہ کوئی ریاستی حکومت پارلیمنٹ میں منظور کئے گئے قانون کو عدالت میں چیلنج کر رہی ہے۔ کل کو مرکزی حکومت ریاستی حکومتوں کی طرف سے اسمبلیوں میں منظور کئے گئے قانون کے خلاف عدالت کا دروازہ كھٹكھٹائےگي۔ اس سے ملک کا وفاقی نظام ہی منہدم ہو جائے گا۔ عدالت نے کہا کہ وزیر اعلی ممتا بنرجی اگرآدھار-موبائل لنکنگ کو واقعی چیلنج کرنا چاہتی ہیں تو انہیں ذاتی طور پر درخواست دائر کرنی چاہئے، نہ کہ حکومت کی جانب سے۔ اس کے بعد مسٹر سبل نے عرضی میں ترمیم کرنے کی اجازت مانگی، جسے عدالت نے تسلیم کر لیا۔ اب محترمہ بنرجی کی جانب سے ذاتی طور پر درخواست دائر کی جائے گی۔

آدھار معاملے میں مودی حکومت کو سپریم کورٹ کا نوٹس ، ممتا حکومت کو لگائی پھٹکار ، کہی یہ بات ؟

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز