یوگی حکومت کو تین ماہ میں ان دو سلاٹر ہاوسوں کو کھولنے کی الہ آباد ہائی کورٹ نے دی ہدایت

Apr 27, 2017 06:38 PM IST | Updated on: Apr 27, 2017 07:56 PM IST

الہ آباد : گزشتہ ماہ الہ آباد میں بند کئے گئے دو مذبح کو کھولنے کو لے کر الہ آباد ہائی کورٹ میں داخل عرضی پر عدالت نے کہا ہے کہ ریاستی حکومت تین ماہ کے اندر تمام معیارات کو پورا کرتے ہوئے سلاٹر ہاؤس کھولنے کو یقینی بنائے ۔ عرضی میں میونسپل کی طرف بند کئے گئے اٹالا سلاٹر ہاؤس اور عید گاہ سلاٹر ہاؤس کو کھولے جانے کا مطالبہ کیا گیا تھا۔

کورٹ نے یہ حکم محمد الیاس قریشی اور دیگر کی جانب سے داخل عرضی پر سماعت کرتے ہوئے دیا۔ ہائی کورٹ نے تین ماہ کی مدت میں سلاٹر ہاؤس میں جاری تعمیراتی کام کو پورا کرتے ہوئے اس کو کھولنے کا حکم دیا ۔ درخواست میں کہا گیا تھا کہ میونسپل کے ذریعہ اٹالا سلاٹر ہاؤس اور عید گاہ سلاٹر ہاؤس کو غیر قانونی بتا کر بند کر دیا گیا تھا، جبکہ مذبح سے آلودگی کا جو مسئلہ تھا ، اسے دور کرنے کی ذمہ داری بھی میونسپل کارپوریشن پر ہی تھی۔

یوگی حکومت کو تین ماہ میں ان دو سلاٹر ہاوسوں کو کھولنے کی الہ آباد ہائی کورٹ نے دی ہدایت

عرضی میں گھریلو لائسنس پر گوشت ایکسپورٹ کرنے پر بھی اعتراض کیا گیا تھا۔ ساتھ ہی ساتھ عدالت کو یہ بھی معلومات دی گئی تھی کہ ریاستی حکومت نے سلاٹر ہاؤس کے اپ گریڈیشن کے لئے 335 کروڑ کا بجٹ مئی 2016 میں جاری کیا تھا، لیکن میونسپل نے اس بجٹ کا بھی بروقت استعمال نہیں کیا۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز