علی گڑھ میں نیا مذبح کھولے جانے کے خلاف اکھل بھارتیہ ہندو مہا سبھا کا احتجاج

Jul 16, 2017 09:33 PM IST | Updated on: Jul 16, 2017 09:33 PM IST

علی گڑھ : اکھل بھارتیہ ہندو مہا سبھا نے حال ہی میں علی گڑھ میں کھولے گئے نئے مذبح کے خلاف ضلع کلکٹریٹ پر احتجاجی مظاہرہ کرتے ہوئے بھارتیہ جنتا پارٹی کی پالیسی کو تنقید کا نشانہ بنایا ۔ ان کا کہنا تھا کہ جہاں یوگی آدتیہ ناتھ کی حکومت تشکیل ہوتے ہی ذبح خانوں کے خلاف مہم چلائی گئی تھی ، وہیں اب انہیں کی حکومت میں نئے مذبح کھولے جارہے ہیں اور مقامی بی جے پی لیڈر ان خاموش تماشائی بنے ہوئے ہیں۔ ہندو مہا سبھا نے الزام عائد کیا کہ مقامی بی جے پی لیڈران کی خاموش رضا مندی ظاہر ہوتی ہے۔

اکھل بھارتیہ ہندو مہاسبھا نے وزیراعلی یوگی آدتیہ ناتھ کے نام موسوم ایک عرضداشت بھی ضلع انتظامیہ کے سپرد کی ۔ اس موقع پر ہندو مہا سبھا کے شہر انچارج سچن شرما نے کہا کہ علی گڑھ کے تالس پور میں الہلال کے نام سے نیا مذبح کھلا ہے ، جو بی جے پی کے دور حکومت میں ہی شروع ہوا ہے ۔ اس سے جہاں پارٹی کی ساکھ خراب ہوئی ہے ، وہیں ہندو طبقہ میں بھی تشویش پیدا ہوگئی ہے ۔

علی گڑھ میں نیا مذبح کھولے جانے کے خلاف اکھل بھارتیہ ہندو مہا سبھا کا احتجاج

ہندو مہا سبھا کے سینئر لیڈر اشوک پانڈے نے کہا کہ سماجوادی پارٹی کے سابق شہر ممبراسمبلی ظفرعالم کے بیٹے نے 4 جولائی 2017 کو ایک نئے مذبح کی شروعات کی ہے ، جبکہ صوبائی حکومت نے یہ یقین دہانی کرائی تھی کہ موجودہ مذبح بند کئے جائیں گے ۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز