کنہیا کا وزیراعظم پر نشانہ ، میرے اکاؤنٹ میں 15 لاکھ آ گئے اور میں نے 3 لاکھ روپے کا ٹیکس بھی ادا کردیا

Mar 17, 2017 04:26 PM IST | Updated on: Mar 17, 2017 06:03 PM IST

نئی دہلی : نیوز 18 کے چوپال پروگرام میں جواہر لال نہرو یونیورسٹی کے سابق صدر کنہیا کمار نے کہا کہ وہ ملک مخالف اور ملک کی بربادی والے نعرے لگانے والوں کے خلاف ہیں۔ جنہوں نے یہ نعرے لگائے ، ان کے خلاف چارج شیٹ فائل کی جانی چاہئے۔کنہیا نے کہا کہ جو آئین کے تحت ہے ، وہی ملک کے مفاد میں ہے اور جو آئین کے خلاف ہے وہ ملک مخالف ہے۔ آزادی کا کوئی رنگ نہیں ہوتا ہے۔

کنہیا کمار نے کہا مودی حکومت پر نشانہ سادھتے ہوئے کہا کہ مرکزی حکومت نے 17 فیصد کا ہائر ایجوکیشن کا بجٹ کم کردیا۔ یہ ظاہر کرتا ہے کہ جو مارجنائزڈ لوگ ہیں ان کو نقصان پہنچانے کی کوشش کی جا رہی ہے۔ میں ساکیت یا اے بی وی پی کو کوئی حب الوطنی کا سرٹیفکیٹ نہیں دے رہا۔کیرالہ اور جہاں پر ایجوکیشن زیادہ ہوتا ہے ، وہاں لوگ سب سے زیادہ بیدار رہتے ہیں۔ جے این یو کو حال فی الحال میں ہی بہترین یونیورسٹی کا ایوارڈ ملا ہے۔

کنہیا کا وزیراعظم پر نشانہ ، میرے اکاؤنٹ میں 15 لاکھ آ گئے اور میں نے 3 لاکھ روپے کا ٹیکس بھی ادا کردیا

وزیر اعظم نریندر مودی کے 15 لاکھ روپے والے وعدے پر کنہیا نے کہا کہ آپ کو تو پتہ نہیں ہے پر میرے اکاؤنٹ میں 15 لاکھ روپے آ گئے ہیں، جس میں سے 3 لاکھ روپے کا ٹیکس بھی ادا کر دیا ہوں۔

کنہیا نے کہا کہ اس ملک کے اندر آئی آئی ٹی میں پڑھنے والوں کے لئے کھانے کی ضرورت ہوتی ہے۔ اگر کھانے کی بات کی جائے ، تو کسان کی باتیں آئیں گی اور ملک کی ترقی میںہمار ے کسان کا سب سے زیادہ تعاون ہوتا ہے۔ کنہیا سے ایک پارٹی اور نظریات کے بارے میں پوچھا گیا تو انہوں نے کہا کہ میں کسی پارٹی سے وابستہ نہیں ہوں۔ میں ملک کی بدنظمی کے خلاف آواز اٹھاتا ہوں۔

کنہیا نے ان لوگوں کو بھی جواب دیا ، جو جے این یو میں پی ایچ ڈی کر رہے طالب علموں پر سوالات اٹھاتے ہیں۔ انہوں نے کہا یہ کنفیوژن ہے، ہر کام کے لئے ایک وقت لگتا ہے، گریجویشن کے لئے کم سے کم 27 سال لگتے ہیں۔ تو میری عمر بہت زیادہ نہیں ہے۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز