گاندربل میں فوج کی پٹائی سے 6 پولیس اہلکار زخمی، فوجی کمانڈر کی کاروائی کی یقین دہانی

Jul 22, 2017 05:47 PM IST | Updated on: Jul 22, 2017 05:47 PM IST

سری نگر۔  وسطی کشمیر کے ضلع گاندربل میں فوج کی 24 راشٹریہ رائفلز (آر آر) نے پولیس تھانہ گنڈ میں داخل ہو کر جموں وکشمیر پولیس کے 6 اہلکاروں کو زدوکوب کرنے کے علاوہ پولیس تھانے کی املاک کو تہس نہس کردیا ہے۔ جمعہ اور ہفتہ کی درمیانی شب کو پیش آنے والے اس واقعہ میں زخمی ہوئے 6 پولیس اہلکاروں کو اسپتال میں داخل کرایا گیا ہے۔ زخمیوں میں ایک اسسٹنٹ سب انسپکٹر بھی شامل ہے۔ ریاستی پولیس سربراہ ڈاکٹر ایس پی وید نے پولیس اہلکاروں کو زدوکوب کرنے کا معاملہ فوج کی 15 ویں کور کے کمانڈر لیفٹیننٹ جنرل جے ایس سندھوکے ساتھ اٹھایا ہے جنہوں نے پولیس سربراہ کو ملوث اہلکاروں کے خلاف کاروائی کا یقین دلایا ہے۔ سرکاری ذرائع نے یو این آئی کو بتایا کہ وادی میں جاری سالانہ امرناتھ یاترا کے سلسلے میں گاندربل کے گنڈ علاقہ میں قائم پولیس ناکے پر تعینات پولیس اہلکاروں نے گذشتہ شام دیر گئے کچھ نجی مسافر گاڑیوں کو رکنے کا اشارہ کیا۔ انہوں نے بتایا کہ گاڑیوں میں عام کپڑوں میں سوار فوج کی 24 آر آر کے اہلکاروں اور ناکے پر تعینات پولیس اہلکاروں کے درمیان گرم گفتاری ہوئی۔ بعد ازاں فوجیوں نے پولیس اہلکاروں کو پیٹنا شروع کردیا۔ ایک رپورٹ کے مطابق یہاں پر مقامی لوگوں نے پولیس اہلکاروں کو فوجیوں کے غیض وغضب سے بچا لیا۔

سرکاری ذرائع نے بتایا کہ ناکے پر پولیس اہلکاروں کی پٹائی کے بعد درجنوں فوجی اہلکار گنڈ پولیس تھانہ پہنچے اور وہاں پولیس اہلکاروں کی شدید پٹائی کرنے کے علاوہ تھانے کی املاک کو بھی تہس نہس کردیا۔ انہوں نے بتایا کہ فوجی اہلکاروں کی پٹائی کی وجہ سے ایک اے ایس آئی سمیت 6 پولیس اہلکار زخمی ہوگئے ہیں جنہیں علاج ومعالجہ کے لئے اسپتال میں داخل کرایا گیا ہے۔ ان میں سے دو اہلکاروں کے شدید طور پر زخمی ہونے کی اطلاعات ہیں۔ واقعہ کے حوالے سے سونہ مرگ اور گنڈ پولیس تھانوں میں فوج کے خلاف ایف آئی آر درج کرلئے گئے ہیں۔ ذرائع نے بتایا کہ فوج نے بھی واقعہ کی تحقیقات شروع کردی ہے۔ اس دوران پولیس ترجمان کی جانب سے واقعہ کے حوالے سے جاری تفصیلی بیان میں کہا گیا ’21 اور 22 جولائی کی درمیانی رات کو 4 مختلف گاڑیوں میں سوار 24 آر آر کے 30 اہلکار پولیس تھانہ سونہ مرگ کی جانب سے پونے اسٹینڈ کے نذدیک قائم ناکے پر تعینات پولیس اہلکاروں کی اجازت حاصل کئے بغیر وہاں سے فرار ہوگئے۔ وہ گاڑیاں یاترا سے واپس آرہی تھیں۔ پہلے سے جاری کردہ کٹ آف ٹائم اور موجودہ حالات کے پیش نظر یاتریوں کو کٹ آف ٹائم کے بعد آگے جانے کی اجازت دینا ممکن نہیں تھا‘۔

گاندربل میں فوج کی پٹائی سے 6 پولیس اہلکار زخمی، فوجی کمانڈر کی کاروائی کی یقین دہانی

انہوں نے کہا ’اے ایس آئی غلام رسول کی قیادت والی پولیس تھانہ گنڈ کی ناکہ پارٹی نے کٹ آف ٹائم کی خلاف ورزی کرنے والی ان گاڑیوں کو روک لیا۔ لیکن عام کپڑوں میں ملبوس فوجی اہلکاروں نے کوئی شناخت ظاہر کئے بغیر گاڑیوں سے نیچے اترکر آن ڈیوٹی افسر اور دیگر اہلکاروں کو پیٹنا شروع کردیا جس کے نتیجے میں اے ایس آئی زخمی ہوگیا‘۔ پولیس ترجمان نے کہا ’اس کے بعد شکلا کی قیادت والی 24 آر آر کے اہلکاروں نے پولیس تھانہ گنڈ میں داخل ہوکر وہاں موجود تمام اہلکاروں کی پٹائی کی۔ اس کے علاوہ تھانے کی املاک اور کچھ اہلکاروں کی ذاتی چیزوں کو نقصان پہنچایا‘۔ انہوں نے بتایا کہ واقعہ کو لیکر مختلف دفعات کے تحت ایف آئی آر درج کرلی گئی ہے۔ دریں اثنا نیشنل کانفرنس کے کارگذار صدر عمر عبداللہ نے مائیکرو بلاگنگ کی ویب سائٹ ٹویٹر پر ٹویٹ کرتے ہوئے کہا ’فوج پولیس اہلکاروں کو پولیس تھانے میں کیسے زدوکوب کرسکتی ہے۔ اس واقعہ کی انتظامیہ کی جانب سے فوری وضاحت اور کاروائی ہونی چاہیے۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز