تصادم ختم، رات تین بجے مشتبہ دہشت گرد مارا گیا، آئی ایس خراسان کا تھا ماڈیول: یوپی پولیس

Mar 07, 2017 05:05 PM IST | Updated on: Mar 08, 2017 08:23 AM IST

لکھنئو۔ دارالحکومت لکھنؤ میں آئی ایس کے مبینہ دہشت گرد سیف اللہ کو 10 گھنٹے سے بھی زیادہ طویل جاری تصادم میں دیر رات تین بجے مار گرایا گیا۔ یہ انکاونٹر منگل دوپہر سے جاری تھا۔ دیر رات تین بجے یوپی پولیس نے تصادم ختم ہونے کا اعلان کیا ہے۔ مارا گیا دہشت گرد آئی ایس آئی ایس کے خراسان ماڈیول کا رکن تھا۔ اے ڈی جی دلجیت چودھری نے دیر رات کہا کہ گھر میں موجود ایک دہشت گرد کو مار گرایا گیا ہے۔  پہلے دو اور دہشت گردوں کے چھپے ہونے کی خبر تھی، لیکن وہ غلط نکلی۔ ایس ایس پی نے رات تین بجے مبینہ دہشت گرد کے مرنے کی تصدیق کی۔

اے ٹی ایس کے آئی جی اسیم ارون نے انکاؤنٹر ختم ہونے کے بعد بتایا کہ دہشت گرد کو زندہ پکڑنے کی کوشش کی گئی تھی۔ مرچي بم کا استعمال بھی اسی لئے کیا گیا تھا۔ دہشت گرد کو دیکھنے کے لئے مائیکرو ٹیوب کیمروں کا استعمال کیا گیا، لیکن اس سے صاف نہیں دکھا۔ پہلے لگا کہ دو دہشت گرد ہوں گے، لیکن آپریشن ختم ہونے پر ایک دہشت گرد ہی نکلا۔  فی الحال پورے کمرے کی تلاشی لی جا رہی ہے۔ انہوں نے کہا کہ یہ دہشت گرد آئی ایس آئی ایس خراسان ماڈیول کا رکن تھا۔

تصادم ختم، رات تین بجے مشتبہ دہشت گرد مارا گیا، آئی ایس خراسان کا تھا ماڈیول: یوپی پولیس

مدھیہ پردیش میں ہوئے ٹرین دھماکہ کے معاملے میں آئی ایس آئی ایس کا ہاتھ ہونے کا اندیشہ سامنے آیا ہے۔ معاملے میں مدھیہ پردیش اے ٹی ایس کی اطلاع پر اتر پردیش کی راجدھانی لکھنؤ میں یوپی اے ٹی ایس نےآئی ایس آئی ایس کے ایک مبینہ دہشت گرد کا پتہ لگایا ہے۔ اس کا نام سیفل بتایا جا رہا ہے۔

ٹھاكرگنج علاقے میں منگل کو یوپی اے ٹی ایس کی ٹیم اور اس مبینہ دہشت گرد کے درمیان انكاونٹر جاری ہے۔ کئی گھنٹے بعد مشتبہ دہشت گردوں نے گھر میں سے پھر کی فائرنگ، دو لوگوں کے اب بھی چھپے ہونے کی خبر۔

این ایس جی کو تیار رہنے کے لئے کہا گیا۔ اے ٹی ایس کے کہنے پر کارروائی کرے گی این ایس جی۔

لکھنؤ کے بعد ممبئی سمیت مہاراشٹر کے کئی ریاستوں میں بھی الرٹ۔

اے ڈی جی لاء اینڈ آرڈر دلجیت چودھری بولے، کچھ اور گھنٹوں کی بات ہے، جلد ہی آپریشن ختم ہو جائے گا۔ کانپور میں دو مشتبہ افراد کو گرفتار کیا گیا۔

دہشت گردوں کو پکڑنے کی کوششیں تیز، انتظامیہ نے ارد گرد کے علاقے کی بجلی کاٹی۔

lucknow terror

تازہ معلومات کے مطابق دونوں جانب سے فائرنگ اس وقت رک گئی ہے۔ اے ٹی ایس نے اس مکان کو گھیر لیا ہے۔ یہاں بتایا جا رہا ہے کہ مشتبہ دہشت گرد نے خود کو ایک کمرے میں قید کر لیا ہے۔ وہ مسلسل جہاد چلا رہا ہے۔ افسر کوشش میں ہیں کہ وہ خود اپنے آپ کو نقصان نہ پہنچا لیں۔

معلومات کے مطابق مدھیہ پردیش دھماکے کے بعد پپريا علاقے میں دو مشتبہ پکڑے گئے۔ ان کے بیان کی بنیاد پر ہی لکھنؤ میں اے ٹی ایس اور مبینہ دہشت گردوں میں تصادم ہو رہا ہے۔ پپريا میں دو مشتبہ افراد کے پکڑے جانے اور دو کے فرار کا ایکسکلوزیو سی سی ٹی وی فوٹیج بھی سامنے آیا ہے۔

lucknow terrorist

یوپی اے ٹی ایس نے ابتدائی تفتیش میں مشتبہ دہشت گرد کے صحیح لوکیشن کا پتہ لگایا، اس کے بعد آپریشن شروع کیا ہے۔ معاملے میں یوپی اے ٹی ایس آپریشن میں مکمل طور پر احتیاط برتے ہوئے کوشش کر رہی ہے کہ مشتبہ دہشت گرد کو زندہ پکڑ لیا جائے۔ اطلاع کے مطابق ہردوئی روڈ کے قریب حاجی کالونی پہ تصادم جاری ہے۔ بتایا جا رہا ہے کہ مشتبہ دہشت گرد کی جانب سے بھی فائرنگ کی جا رہی ہے۔

lucknow ats

اس پورے آپریشن کی قیادت اے ڈی جی قانون دلجیت چودھری کر رہے ہیں۔ ڈی جی پی جاويد احمد پورے آپریشن پر نظر رکھے ہوئے ہیں۔ اے ٹی ایس کمانڈو کو مینج اے ٹی ایس کے آئی جی اسیم ارون کر رہے ہیں۔ موقع پر اے ٹی ایس سمیت اترپردیش پولیس کے اعلی افسران موجود ہیں۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز