شمالی کشمیر میں ایل او سی پر دراندازی کی کوششوں میں اضافہ، پانچ دن میں 13 جنگجو ہلاک

Jun 12, 2017 03:37 PM IST | Updated on: Jun 12, 2017 03:37 PM IST

سری نگر۔  شمالی کشمیر کے تین اضلاع کپواڑہ، بارہمولہ اور بانڈی پورہ میں لائن آف کنٹرول کے نزدیک گھنے جنگلوں میں فوج کا گزشتہ 48 گھنٹوں کے دوران جنگجوؤں کے ساتھ کوئی آمنا سامنا نہیں ہوا ہے۔ سرکاری ذرائع نے یو این آئی کو یہ اطلاع دیتے ہوئے کہا کہ ایل او سی کے نزدیک ایک وسیع جنگلی علاقہ میں فوج کا تلاشی آپریشن گذشتہ ایک ہفتے سے جاری ہے۔ فوج نے ضلع کپواڑہ کے نوگام اور مژھل سیکٹروں ، ضلع بارہمولہ کے اوڑی سیکٹر اور ضلع بانڈی پورہ کے گریز سیکٹر میں 6 سے 10 جون کے دوران پاکستان زیر قبضہ کشمیر سے دراندازی کی پانچ بڑی کوششوں کو ناکام بناتے ہوئے 13 جنگجوؤں کو ہلاک کرنے کا دعویٰ کیا ہے۔ تاہم دراندازی کی ان کوششوں کو ناکام بنانے کے دوران طرفین کے مابین گولہ باری کے نتیجے میں ایک فوجی اہلکار ہلاک جبکہ دو دیگر زخمی ہوئے ہیں۔ اس دوران فوج نے دعویٰ کیا ہے کہ اوڑی سیکٹر میں 9 جون کو مارے گئے پانچ جنگجوؤں کو اپنے آقاوؤں نے فدائین حملہ انجام دینے کی ذمہ داری تفویض کی تھی۔

فوج کا کہنا ہے’ مارے گئے جنگجو 19 ستمبر 2016 کو اوڑی سیکٹر میں ہوئے حملے جس میں 17 فوجی ازجان ہوئے تھے، کے طرز پر حملہ انجام دینے کے ارادے سے سرحد کے اس پار داخل ہوئے تھے‘۔ سرکاری ذرائع نے بتایا کہ پیر کی صبح روشنی کی پہلی کرن کے ساتھ ضلع کپواڑہ کے نوگام اور مژھل سیکٹروں ، ضلع بارہمولہ کے اوڑی سیکٹر اور ضلع بانڈی پورہ کے گریز سیکٹر میں تلاشی آپریشن بحال کیا گیا۔ انہوں نے بتایا ’گریز سیکٹر میں 10 جون کو ایک جنگجو کو ہلاک کیا گیا۔ تاہم اس کے بعد جھڑپ کے مقام سے فرار ہونے والے جنگجوؤں سے فوجیوں کا تاحال کوئی آمناسامنا نہیں ہوا۔ اسی طرح دوسرے سیکٹروں میں بھی فوج کا جنگجوؤں کے ساتھ کوئی آمنا سامنا نہیں ہوا ہے‘۔

شمالی کشمیر میں ایل او سی پر دراندازی کی کوششوں میں اضافہ، پانچ دن میں 13 جنگجو ہلاک

فائل فوٹو

سرکاری ذرائع نے بتایا کہ ایل او سی کے چار مختلف سیکٹروں میں جاری تلاشی آپریشنوں میں سینکڑوں کی تعداد میں سیکورٹی فورس اہلکار شامل ہیں۔ انہوں نے بتایا کہ جانی نقصان کو ٹالنے کے لئے تلاشی آپریشنوں کو رات کے دوران معطل رکھا جاتا ہے۔ انہوں نے بتایا ’تاہم جنگجوؤں کو فرار ہونے سے روکنے کے لئے ہمارے فوجی جوان جنگلوں کا چوبیسوں گھنٹے محاصرہ جاری رکھے ہوئے ہیں‘۔ دفاعی ذرائع نے بتایا کہ ایل او سی پر برف پگھلنے کے ساتھ ہی دراندازی کی کوششوں میں اضافہ ہونے لگا ہے اور ہمارے جوان ایسی کسی بھی کوشش کو ناکام بنانے کے لئے ہائی الرٹ پر ہیں۔ انہوں نے بتایا ’ہمیں موصولہ خفیہ اطلاعات کے مطابق سرحد کی دوسری جانب لانچنگ پیڈس پر جنگجوؤں کی ایک بڑی تعداد ہمارے علاقے میں داخل ہونے کے فراق میں بیٹھے ہیں۔ ایل او سی پر تعینات ہمارے جوان پہلے سے ہی ہائی الرٹ پر ہیں‘۔ ذرائع نے بتایا کہ موسم میں تبدیلی کے ساتھ ہی ایل او سی پر پیدل گشت تیز کردی گئی ہے۔

دفاعی ذرائع نے بتایا کہ شمالی کشمیر میں ایل او سی پر 7 جون سے دراندازی کی پے درپے پانچ کوششوں کو ناکام بناتے ہوئے 13جنگجوؤں کو ہلاک کیا جاچکا ہے۔ انہوں نے بتایا کہ گریز سیکٹر میں 10 جون کو ایک جنگجو کی ہلاکت سے قبل فوجیوں نے 9 ون کو ضلع بارہمولہ میں ایل او سی کے اوڑی سیکٹر میں دراندازی کی ایک بڑی کوشش کو ناکام بناتے ہوئے 5 دراندازوں کو ہلاک کیا۔ بریگیڈیئر وائی ایس اھلاوت نے اتوار کو اوڑی میں نامہ نگاروں کو بتایا کہ 9 جون کو اوڑی سیکٹر میں مارے گئے جنگجو فدائین اسکواڈ کا حصہ تھے۔ انہوں نے کہا کہ ایل او سی کے نذدیک گھنے جنگلوں میں تلاشی آپریشن بدستور جاری رکھا گیا ہے۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز