پی وی سندھو نے جیتا انڈیا اوپن خطاب، کیرولینا سے لیا اولمپکس کا بدلہ

Apr 03, 2017 08:40 AM IST | Updated on: Apr 03, 2017 08:40 AM IST

نئی دہلی۔  اولمپک سلور میڈلسٹ ہندستان کی پی وی سندھو نے اسپین کی کیرولینا مارین سے ریو اولمپکس کے طلائی تمغہ مقابلے کی شکست کا بدلہ چکاتے ہوئے اتوار کو 21۔19، 21۔16 کی فتح کے ساتھ بي ڈبليوایف سپر سیریز انڈیا اوپن بیڈمنٹن ٹورنامنٹ کا خطاب پہلی بار جیت لیا۔ سندھو نے پہلی بار انڈیا اوپن کا ٹائٹل جیت لیا ہے اور اس کے ساتھ ہی وہ ہندستانی بیڈمنٹن کی ناقابل تردید طور پر ملکہ بن گئی ہیں۔تیسری سیڈ سندھو نے ٹاپ سیڈ اور عالمی اور اولمپک چمپئن مارین سے خطابی مقابلہ 46 منٹ میں اپنے نام کر کیریئر کی سب سے بڑی کامیابی حاصل کی۔ سندھو کے مقابلے کو دیکھنے کے لئے سري فورٹ اسٹیڈیم شائقین سے کھچا کھچ بھرا ہوا تھا اور ہندستانی اسٹار نے پورے میچ میں غضب کا مظاہرہ کیا۔خطاب جیتنے کا پوائنٹس ملتے ہی سندھو نے چمپئن کی ہنکار لگائی اور اسٹیڈیم میں ترنگے لہرانے لگے ۔ مرکزی وزیر کھیل وجے گوئل اس تاریخی موقع کے گواہ بنے۔گوئل دوسرے گیم کے دوران اسٹیڈیم پہنچے تھے۔

انڈیا اوپن کی تاریخ میں یہ چوتھا موقع ہے جب ہندوستانی کھلاڑی نے یہاں خطاب جیتا۔سائنا نہوال نے 2010 اور 2015 میں اور كندابي سری کانت نے 2015 میں انڈیا اوپن کے خطاب جیتے تھے۔سندھو کو ریو اولمپکس کے طلائی تمغہ مقابلے میں مارین نے 19۔21، 21۔12، 21۔15 سے شکست دی تھی۔لیکن سندھو نے اب اس شکست کا بدلہ چکا لیا۔

پی وی سندھو نے جیتا انڈیا اوپن خطاب، کیرولینا سے لیا اولمپکس کا بدلہ

سندھو نے گزشتہ سال کے آخر میں دبئی ورلڈ سپر سیریز فائنلس کے گروپ میچ میں مارین کو شکست دی تھی جبکہ میرین نے اس سال جنوری میں اسی کورٹ پر سندھو کو پریمیئر بیڈمنٹن لیگ (پي بي ایل) میں شکست دی تھی۔دونوں کھلاڑیوں کے درمیان کیریئر کا یہ 10 واں مقابلہ تھا۔دونوں پہلی بار 2010 کے عالمی جونیئر چمپئن شپ میں آمنے سامنے ہوئی تھیں اور پھر ہندوستانی کھلاڑی فاتح بنی تھیں ۔ سندھو نے اس جیت کے ساتھ میرین کے خلاف اپنا کیریئر ریکارڈ 5۔5 کر لیا ہے۔عالمی رینکنگ میں پانچویں نمبر کی کھلاڑی سندھو نے تیسرے نمبر کی مارین کے خلاف میچ میں ہر لحاظ سے چمپئن جیسا مظاہرہ کیا۔سندھو کے لیے میچ کا سب سے اہم پوائنٹس پہلے گیم میں 18۔19 کے اسکور پر تھا جب انہوں نے 316 کلو میٹر فی گھنٹہ کی رفتار کا اسمیش لگایا اور پھر مارین کے ریٹرن پر لاجواب ڈراپ کھیل کر 19۔19 سے برابر کر دی۔

یہ پورے میچ کا سب سے اہم پوائنٹس تھا جس کے بعد سندھو نے مسلسل دو پوائنٹس لے کر 21۔19 سے پہلا گیم جیت لیا اور میرین پر نفسیاتی دباؤ بنا لیا۔ سندھو نے میچ کے دوران کئی شاٹ میں غضب کی پلیسمینٹ دکھائی اور پورے کورٹ میں مارین کو پریشانی میں ڈالے رکھا۔ دوسرے گیم میں تو سندھو نے دو بار نیٹ پر جھپٹتے ہوئے غضب کے شاٹ لگائے اور دو پوائنٹس حاصل کئے جس سے انہیں 16-13 اور پھر 19-14 کی برتری حاصل ہوئی۔ سندھو نے عالمی اور اولمپک چیمپئن مارین کو کئی بار غلطیاں کرنے پر بھی مجبور کیا۔ مارین نے اولمپکس فائنل میں سندھو سے پہلا گیم ہارنے کے بعد اگلے دو گیم جیتے تھے۔ لیکن اس بار ہندوستانی کھلاڑی نے پہلا گیم اسی 21-19 کے فرق سے جیتنے کے بعد مارین كو واپسی کرنے کا کوئی موقع نہیں دیا۔ فائنل میں سندھو وہی پیلے رنگ کی ڈریس میں اتریں جو انہوں نے کوارٹر فائنل میں سائنا نہوال کو شکست دینے کے دوران پہنی تھی۔ پہلے گیم کا پہلا پوائنٹ مارین نے اسمیش سے لیا لیکن پھر تین بار رٹرن باہر کھیل کر پوائنٹس گوادیئے۔ سندھو نے جلد ہی 6-1 کی برتری حاصل کرلی۔ ہندوستانی کھلاڑی نے اسمیش سے زیادہ ڈراپ شاٹ اور پلیسمینٹ کا استعمال کیا۔ انہوں نے اپنی برتری کو 7-4، 10-7، 14-12 اور 16-14 تک پہنچا دیا لیکن مارین نے ایک ڈراپ میچ میں پہلی بار 16-16 پر برابری حاصل کی۔ اسکور پھر 18-18 بھی پہنچا۔ مارین نے پہلی بار 19-18 پر جاکر برتری بنائی لیکن سندھو نے پھر مسلسل تین پوائنٹس لے کر 21-19 سے پہلا گیم ختم کر دیا۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز