لائن آف کنٹرول پر تجارت ٹیرر فنڈنگ کا ذریعہ ، این آئی اے کی پاکستان سے کاروباربند کرنے کی سفارش

Jul 28, 2017 09:42 PM IST | Updated on: Jul 28, 2017 09:42 PM IST

سری نگر : قومی جانچ ایجنسی نے سفارش کی ہے کہ لائن آف کنٹرول پر پاکستان کے ساتھ تجارت بند کردینی چاہئے۔ این آئی اے کی جانب سے وزارت داخلہ کو بھیجے گئی سفارش میں کہا گیا ہے کہ جموں کشمیر کے پونچھ اور اڑي سے ہونے والے کاروبار کو فوری طور پر بند کردیا جانا چاہئے ، کیونکہ سرحد پار تجارت کے بہانے پاکستان میں واقع دہشت گرد تنظیمیں ہندوستان میں دہشت گردانہ سرگرمیوں کے لئے فنڈز بھیجتی ہیں۔

قابل ذکر ہے کہ ہندوستان اور پاکستان کے درمیان اچھے تعلقات بحال کرنے کے لئے سال 2008 میں اڑي-پونچھ سمیت کچھ جگہوں سے پاکستان کے ساتھ پیشہ ورانہ تعلقات کی شروعات کی گئی تھی۔ اس اقدام کا مقصد تھا کہ جموں و کشمیر کے تاجر پاکستان سے تجارت کر سکیں۔ لیکن بعد میں پتہ چلا کہ دہشت گرد اور دہشت گرد تنظیمیں اس تجارتی سرگرمی کا استعمال دہشت گردانہ فنڈنگ ​​کے لئے کر رہی ہیں۔

لائن آف کنٹرول پر تجارت ٹیرر فنڈنگ کا ذریعہ ، این آئی اے کی پاکستان سے کاروباربند کرنے کی سفارش

file photo

میڈیا رپورٹس کے مطابق قومی جانچ ایجنسی کا کہنا ہے کہ جموں و کشمیر میں سرحد پر تجارت کی آڑ میں دہشت گردی اور کشمیر میں تشدد کو فروغ دیا جا رہا ہے اور اس کے پیچھے پاکستان میں واقع دہشت گرد تنظیمیں اور ایجنسیاں کام کر رہی ہیں۔ این آئی اے کا ماننا ہے کہ پاکستان نے گزشتہ کچھ عرصے میں وادی میں حوالہ کے ذریعے کافی رقم پہنچائی ہے۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز