پیو ریسرچ سینٹرکی رپورٹ میں دعوی ، سال 2050 تک سب سے زیادہ مسلمان ہندوستان میں ہوں گے

Mar 03, 2017 12:59 PM IST | Updated on: Mar 03, 2017 12:59 PM IST

نئی دہلی : سال 2050 تک ہندوستان دنیا کا سب سے زیادہ مسلم آبادی والا ملک بن جائے گا۔ امریکہ کے ایک ریسرچ سینٹر کے ذریعہ جاری کی گئی رپورٹ میں یہ دعوی کیا گیا ہے۔

واشنگٹن میں واقع پیو ریسرچ سینٹرنے حال ہی میں دی فیوچر آف ورلڈ رليجن نامی ایک رپورٹ شائع کی ہے۔ اس کے مطابق 2010 سے 2050 کے درمیان مسلمانوں کی آبادی میں 73 فیصد اضافہ ہوگا۔

پیو ریسرچ سینٹرکی رپورٹ میں دعوی ، سال 2050 تک سب سے زیادہ مسلمان ہندوستان میں ہوں گے

ہندوستانی مسلمان: فائل فوٹو

عیسائیوں کی آبادی میں 35 فیصد کی شرح سے اضافہ ہوگا۔ یہ شرح گزشتہ کچھ سالوں کے مقابلہ میں تقریبا ایک جیسی ہی ہے۔ آبادی میں اضافہ کی شرح میں ہندو تیسرے مقام پر ہیں، جن کی آبادی 34 فیصد کی شرح سے بڑھ رہی ہے۔ مسلم آبادی اگر اسی شرح سے بڑھتی رہی ہے ، تو 2050 تک ہندوستان میں مسلمانوں کی آبادی 30 کروڑ ہو جائے گی، جو دنیا میں کسی بھی ملک کے مقابلہ میں سب سے زیادہ ہوگی۔

اسلام دنیا کا سب سے تیزی سے بڑھنے والا مذہب ہے۔ اگر اس کی موجودہ ترقی کی شرح 2050 کے بعد بھی برقرار رہی تو 2070 تک دنیا میں سب سے زیادہ لوگ مسلم کمیونٹی کے ہوں گے، جن کی کل تعداد 2.8 ارب ہوگی۔

پیو ریسرچ سینٹر کی رپورٹ کے مطابق 2010 تک دنیا میں مسلمانوں کی آبادی 1.6 ارب تھی۔ فی الحال انڈونیشیا میں دنیا کی سب سے زیادہ مسلم آبادی رہتی ہے۔

muslims

امریکہ اور یورپ میں بھی مسلم آبادی میں اضافہ

امریکہ اور یورپ میں بھی مسلم آبادی میں اضافہ ہوگا۔ فی الحال امریکہ میں کل آبادی کا تقریبا ایک فیصد حصہ مسلم آبادی کا ہے۔ 2050 میں یہ فیصد بڑھ کر 2.1 ہو جائے گا ۔ مسلم ممالک سے دیگر ممالک میں جانے والے اميگرینٹس کی وجہ سے یورپ میں بھی اسلام کے ماننے والے لوگوں کی تعداد میں اضافہ ہوگا۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز