ڈی جی ایم او کی میٹنگ میں ہندوستان کا پاکستان کو دو ٹوک جواب ، ہماری فوج کے پاس جوابی کارروائی کا پورا حق

Sep 22, 2017 08:48 PM IST | Updated on: Sep 22, 2017 09:29 PM IST

نئی دہلی : ہندستان کے ڈائریکٹر جنرل آف ملٹری آپریشن (ڈی جی ایم او )نے آج اپنے پاکستانی ہم منصب سے کہاکہ پاکستان کی فوج کی طرف کنٹرول لائن پر جنگ بندی کی مسلسل خلاف ورزی کی جارہی ہے اور ایسی صورت میں ہندستانی فوج کو بھی جوابی کارروائی کا حق ہے ۔ پاکستان کی پہل پر دونوں ملکوں کے ڈی جی ایم اوکی فون پر ہوئی بات چیت میں پاکستانی ڈائریکٹر جنرل نے الزام لگایا کہ ہندستان کے سرحدی سلامتی دستوں کے جوان جموں سیکٹر کی دوسری طرف پاکستان کے لوگوں کو نشانہ بنارہے ہیں ۔اس پر ہندستان کی طرف سے کہا گیا کہ جموں سیکٹر میں جنگ بندی کی ہر بار خلاف ورزی پاک رینجروں نے کی ہے اور بی ایس ایف کے جوانوں نے صرف اسکا معقول جواب دیا ہے ۔

ہندستانی فوج کے ڈائریکٹر جنرل نے کہا کہ پاکستان کی طرف سے کی گئی گولہ باری کے جواب میں کسی بھی شہری ٹھکانے کو نشانہ نہیں بنایا گیا ہے ۔اس کے ساتھ ہی یہ بھی کہا گیاکہ بی ایس ایف نے پاکستان کی طرف سے امرتسر سرحد پر ہندستان میں مسلح دراندازی کے واقعہ کو روکنے کے لئے فائرنگ کی۔

ڈی جی ایم او کی میٹنگ میں ہندوستان کا پاکستان کو دو ٹوک جواب ، ہماری فوج کے پاس جوابی کارروائی کا پورا حق

ہندستان کی طرف سے یہ بھی کہا گیا کہ سرحد پر دراندازی کے واقعات پاکستان کی اگلی چوکیوں پر تعینات فوجیوں کے سرگرم تعاون سے ہورہے ہیں جس کی وجہ سے کنٹرول لائن کے آس پاس کے علاقوں میں امن اور داخلی سیکورٹی کے لئے خطرہ پیدا ہورہا ہے ۔ہندستانی سلامتی دستوں کو پاکستانی فوج کی مدد سے نشانہ بنایا جارہا ہے ۔ہندستانی ڈی جی ایم اونے کہا کہ انکی فوج ایک پیشہ ور فوج ہے جسے اپنے جوانوں کے مارے جانے پر مناسب کارروائی کرنے کا حق ہے ۔انھوں نے کہا کہ اگر پاکستان کی طرف سے تعاون ملتا ہے تو ہندستانی فوج ہمیشہ کی طرح کنٹرول لائن پر امن وامان قائم رکھنے کے لئے پر عزم ہے ۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز