اترپردیش : سڑکوں کو گڑھا سے پاک بنانے کی یوگی حکومت کی مہم کے دوران کروڑوں روپے کا گھوٹالہ

اترپردیش میں سڑکوں کو گڑھا سے پاک بنانے کے دوران بڑے گھوٹالہ اور بدعنوانیوں کا انکشاف ہوا ہے۔

Sep 22, 2017 03:37 PM IST | Updated on: Sep 22, 2017 03:37 PM IST

لکھنو : اترپردیش میں سڑکوں کو گڑھا سے پاک بنانے کے دوران بڑے گھوٹالہ اور بدعنوانیوں کا انکشاف ہوا ہے۔ انتظامیہ کی طرف سے تشکیل دی گئی ٹیم نے جو رپورٹ پیش کی ہے ، اس میں بتایا گیا ہے کہ 10 اضلع کی 25 سڑکیں بنتے ہی ٹوٹ گئیں ۔ یہی نہیں بلکہ محکمہ نے سڑکوں کو گڑھا سے پاک بنانے کیلئے جو کروڑوں روپے جاری کئے تھے وہ بھی پانی میں بہہ گئے ۔

جانچ رپورٹ میں پی ڈبلی وڈی کے 73 افسران کے خلاف بے ضابطگیوں کی بات کہی گئی ہے ۔ بتایا جارہا ہے کہ محکمہ اب ان افسران کے خلاف کارروائی کی تیاری کررہا ہے۔ جانچ رپورٹ لکھنو دفتر میں جمع کرادی گئی ہے۔ سبھی جانچ رپورٹ محکمہ کے ہیڈ وی کے سنگھ کے پاس ہے اور اب صرف کارروائی باقی ہے۔

اترپردیش : سڑکوں کو گڑھا سے پاک بنانے کی یوگی حکومت کی مہم کے دوران کروڑوں روپے کا گھوٹالہ

بی کے سنگھ نے سبھی جانچ رپورٹ کا جائزہ بھی لے لیا ہے ۔ قصور وار افسران کے خلاف کارروائی کرتے ہوئے انہیں معطل کرنے کی تیاری شروع کردی گئی ۔ جان کے دوران 10 اضلاع میں سڑکیں سب سے زیادہ خستہ حالت میں پائی گئی ہیں۔ ہاتھرس ، مرزا پور ، غازی پور ، اوریا ، بستی ، شراوستی ، پیلی بھیت ، اعظم گڑھ اور الہ آباد میں بھی بے ضابطگیاں پائی گئی ہیں ۔ اس سلسلہ میں 20 ایگزکٹیو انجینئر ، 26 اسسٹنٹ انجینئر ، 27 آور انجینئر اور دو ٹھیکہ دار کمپنیوں کے خلاف بھی کارروائی کی جائے گی۔

خیال رہے کہ 15 جون کو ریاستی حکومت نے سبھی سڑکوں کو گڑھا سے پاک بنانے کی مہم کے تحت 72 ہزار کلو میٹر سے زیادہ لمبی سڑکوں کو گڑھا سے پاک کرنے کا دعوی کیا تھا ، ان میں سے کئی اضلاع میں ان کی کوالیٹی کو لے کر لگاتار شکایتیں موصول ہورہی تھیں ، جس کے پیش نظر 21 اگست سے 31 اگست تک ریاست کے سبھی اضلاع میں خصوصی جانچ مہم چلائی گئی تھی ۔ لیکن پروانچل کے دو درجن اضلاع کے سیلاب کی زد میں آجانے کی وجہ سے یہ جانچ مقررہ وقت پر پوری نہیں کی جاسکی تھی ۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز