جماعت اسلامی ہند کے وفد کا میوات کا دورہ ، مقتول پہلو خان کے اہل خانہ کو ہر ممکن مدد کی یقین دہانی

Apr 10, 2017 06:03 PM IST | Updated on: Apr 10, 2017 08:13 PM IST

نئی دہلی : جماعت اسلامی ہند کا ایک اعلٰی سطحی وفد آج ہریانہ کے نوح ضلع ، علاقہ میوات کے جے سنگھ پور گا ؤں کا دورہ کیا اور نام نہاد گؤ رکشکوں کے ظلم کے شکارمقتول پہلو خان کے اعزا سے اظہار تعزیت کی۔ وفد نے متاثرین کے گھر پہونچ کران کی خیریت دریافت کی اور تکلیف کی اس گھڑی میں انہیں ہر ممکن مدد کی یقین دہانی کرائی۔ نائب امیر جماعت نصرت علی کی قیادت میں وفد میں قیم جماعت انجینئر محمد سلیم ، دہلی و ہریانہ جماعت کے ناظم علاقہ خلیق الزماں شامل تھے۔

وفد نے پہلو خان کے دوبیٹوں ارشاد اور عارف سے ملکر ان کے والد کی موت پر اظہار تعزیت کی ۔ پہلو خان کے یہ دونوں بیٹے بھی اپنے والد کے ساتھ تھے اس حملے میں زخمی ہوئے ہیں۔ دریں اثنا اس پورے معاملے پر آج جے پور سنگھ گاؤ ں میں تیرہ قبیلوں کے لوگوں کی پنچایت جاری ہے جس میں مقامی سیاسی و سماجی کار کن شریک ہو رہے ہیں۔زندہ بچ جانے والوں میں سب سے زیاد ہ چوٹ عظمت خان کو آئی ہے ان کی کمر کی ہڈیوں میں شدید زخم ہے۔

جماعت اسلامی ہند کے وفد کا میوات کا دورہ ، مقتول پہلو خان کے اہل خانہ کو ہر ممکن مدد کی یقین دہانی

قیم جماعت انجینئر محمد سلیم صاحب نے کہا کہ ہم دکھ کی اس گھڑی میں اثرین کے اہل خانہ کے ساتھ ہیں ، انہیں انصاف دلانے کے لیے ہمارا تعاون جاری رہے گا۔ انہوں نے کہا کہ اس وقت متاثرین کو قانونی امداد پہنچانے کی کو شش ہونی چاہیے تاکہ آنے والے دنوں میں اس طرح کا غیر انسانی حرکت کرنے والوں کو انصاف کے کٹہرے میں کھڑا کیا جا سکے۔ وفد نے اس موقع پر موجود علاقے کے با اثر سماجی و سیاسی شخصیات سے ابتک کی صورت حال اور آئندہ کی حکمت عملی کے بارے میں معلوم کیا ،اور متاثرہ افراد سے پورے معاملے کی تفصیلات سے آگاہی حاصل کی متاثرین کے اہل خانہ سے ملکر ہر ممکن تعاون کی یقین دہانی کرائی۔

اس موقع پر پہلو خان کے دو بیٹوں ارشاد اور عارف نے پورے واقعے کی تفصیل بیان کی ۔انہوں نے بتایا کہ ہما ری روزی روٹی کا واحد ذریعہ دودھ کا کاروبار ہے ، ہم اسی سلسلے میں اپنے والد پہلو خان کے ساتھ بازار گئے تھے ،ہمارے پاس بازار کی رشید بھی تھی لیکن ، تشدد پر آمادہ بھیڑ نے ہماری کوئی بات نہیں سنی اور گاڑی روک کر حملے شروع کر دیے ،ہماری نقدی بھی چھین لی اور ہمارے والد کو بری طرح پیٹا ہم سب کو بری طرح زخمی کر دیا۔ اور ہمارے خلاف اب گؤ کشی کا کیس درج کر لیا گیا ہے ، حملہ آوروں کے خلاف کوئی ٹھوس کار روائی نہیں ہوئی ہے ، نہ ہی ضلع انتظامیہ اور نہ ہی ریاستی حکومت کا کوئی نمائندہ ہماری خیریت دریافت کیا۔ ہم تو بس یہی چاہتے ہیں کہ ہمارے والد کے قاتلوں کو فوری طور پر سزا ملے۔عظمت خان نے بتایا کہ پولیس انتطامیہ نے ہمیں بے حد پریشان کیا ، زخمی حالت میں اسپتال سے نکال کر تھانے میں 24 گھنٹے تک رکھا جس سے میری طبیعت اور بگڑ گئی۔ ہماری تو ایک ہی مانگ ہے کہ ہمیں جلد انصاف ملے۔ ریاست کی بی جے حکومت اور اپوزیشن جماعتوں کا رویہ انتہائی غیر ذمہ دارانہ ہے۔ اس حملے میں پہلو خان ،عظمت خان، ارشاد، عارف ،رفیق کو نشانہ بنایا گیا ہے۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز