Live Results Assembly Elections 2018

جامعہ آج ڈاکٹر فرینک اسلام کو دے گا ’ امتیاز جامعہ‘ ایوارڈ، جامعہ المنائی میں شدید بے چینی

نئی دہلی۔ جامعہ ملیہ اسلامیہ نے امریکہ نشیں تاجر، سماجی خدمت گار اور اے ایم یو المانئی ڈاکٹر فرینک ایف اسلام کو آج ’ امتیاز جامعہ‘ ایوارڈ سے نوازنے کا فیصلہ کیا ہے جس کو لے کر جامعہ کے سابق طلبہ میں زبردست بے چینی پائی جا رہی ہے۔

Feb 13, 2017 09:48 AM IST | Updated on: Feb 13, 2017 09:56 AM IST

نئی دہلی۔ جامعہ ملیہ اسلامیہ نے امریکہ نشیں تاجر، سماجی خدمت گار اور اے ایم یوالمنائی ڈاکٹر فرینک ایف اسلام کو آج ’ امتیاز جامعہ‘ ایوارڈ سے نوازنے کا فیصلہ کیا ہے جس کو لے کر جامعہ کے سابق طلبہ میں زبردست بے چینی پائی جا رہی ہے۔ جامعہ کے سابق طلبہ نے یہ کہتے ہوئے اس کی مخالفت کی ہے کہ یہ ایوارڈ جامعہ کے سابق طلبہ کو ہی دیا جانا چاہئے کیونکہ اس ایوارڈ پر انہی کا سب سے پہلا حق بنتا ہے۔ طلبہ نے سوشل میڈیا اور دیگر ذرائع سے اس معاملہ میں اپنی شدید برہمی ظاہر کی ہے۔

اس پر اپنا سخت ردعمل ظاہر کرتے ہوئے کویت میں مقیم جامعہ کے سابق طالب علم علی ارشد اپنے ٹائم لائن پر لکھتے ہیں کہ یہ سن کر بڑی خوشی ہوئی کہ جامعہ نے امتیاز جامعہ نام سے ایک نیا ایوارڈ شروع کیا ہے۔ اس کے لئے جامعہ انتظامیہ کو بہت بہت مبارکباد۔ انہوں نے کہا کہ حالانہ ہمیں یہ توقع تھی کہ یہ ایوارڈ جامعہ کے سابق طلبہ کو دیا جائے گا، لیکن افسوس ایسا نہیں ہوا۔ وہ ناراضگی کے انداز میں کہتے ہیں کہ علی گڑھ مسلم یونیورسیٹی کے دو کامیاب سابق طلبہ کو یہ ایوارڈ دیا جا رہا ہے۔ علی ارشد مزید لکھتے ہیں کہ اگر یہ ایوارڈ جامعہ المنائی کو دیا جاتا تو اس سے ان کے درمیان ایک مثبت پیغام جاتا اور اس سے جامعہ کی روایت کی پاسداری ہوتی۔ وہ کہتے ہیں کہ جامعہ کا یہ فیصلہ جامعہ اور اس کے سابق طلبہ کی توہین ہے۔

جامعہ آج ڈاکٹر فرینک اسلام کو دے گا ’ امتیاز جامعہ‘ ایوارڈ، جامعہ المنائی میں شدید بے چینی

جامعہ کے وائس چانسلر پروفیسر طلعت احمد: فائل فوٹو

Loading...

جامعہ کے ایک دیگر سابق طالب علم  عظیم خان لکھتے ہیں کہ یہ انتہائی بد بختانہ  فیصلہ ہے۔ جامعہ کے سابق طلبہ نے بھی کارہائے نمایاں انجام دے کر جامعہ اور ملک کا نام روشن کیا ہے ، لہذا اس ایوارڈ کے حقیقی مستحق وہی ہیں۔ وہیں، ظفر احمد لکھتے ہیں کہ مجھے یقین ہی نہیں آ رہا ہے کہ جامعہ اپنے سابق طلبہ کو اس طرح نظر انداز کر سکتا ہے۔ جامعہ اپنے طلبہ کو چھوڑ کر اے ایم یو کے سابق طلبہ کو ایوارڈ دینے جا رہا ہے ، مجھے اس پر بہت زیادہ حیرت ہو رہی ہے۔

Jamia university

 

اس سے پہلے جامعہ کے وائس چانسلر پروفیسر طلعت احمد نے اوکھلا ٹائمس ڈاٹ کام کے ساتھ بات چیت میں اپنے اس فیصلہ کا دفاع کرتے ہوئے کہا کہ اس ایوارڈ کا جامعہ کے سابق طلبہ سے کچھ بھی لینا دینا نہیں ہے۔ ہم ڈاکٹر فرینک اسلام اور دیگر کو جو یہ ایوارڈ دے رہے ہیں وہ متعلقہ شعبوں میں ان کی عظیم خدمات کے عوض ہے۔ خیال رہے کہ یہ ایوارڈ اسی سال شروع کیا گیا ہے۔

 

 

Loading...

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز