یوگی ادتیہ ناتھ نے مسلمان عورتوں کی لاشوں کی عصمت دری کیلئے کہا تھا : عمر عبداللہ

Mar 19, 2017 04:24 PM IST | Updated on: Mar 19, 2017 04:24 PM IST

سری نگر: بھارتیہ جنتا پارٹی کی جانب سے شعلہ بیان لیڈر یوگی ادتیہ ناتھ کو ہندوستان کی سب سے بڑی ریاست اترپردیش کا وزیر اعلیٰ منتخب کئے جانے پر جموں وکشمیر کے سابق وزیر اعلیٰ عمر عبداللہ نے اپنے ردعمل میں کہا کہ مسٹر یوگی وہ شخص ہے جس نے مسلم خواتین کی لاشوں کی عصمت دری کے لئے کہا تھا۔ انہوں نے کہا کہ ہندوستان کی سب سے کثیر آبادی والی ریاست (اترپردیش) کی 18 فیصدی آبادی (مسلمان)اپنی مستقبل کو لیکر گھبرا گئی ہوگی۔ عمر عبداللہ جو کہ جموں وکشمیر کی سب سے بڑی اپوزیشن جماعت نیشنل کانفرنس کے کارگذار صدر بھی ہیں، نے مائیکرو بلاگنگ کی ویب سائٹ ٹویٹر پر اپنے ایک ٹویٹ میں کہا کہ محبوبہ مفتی کو مبارکباد پیش کرتا ہوں۔ آپ کے دوستوں اور اتحادیوں نے اُس شخص کو وزیر اعلیٰ منتخب کرلیا ہے ،جس نے مسلم خواتین کی لاشوں کی عصمت دری کے لئے کہا تھا ۔

انہوں نے اپنے ایک اور ٹویٹ میں کہا کہ آج ہندوستان کی سب سے کثیر آبادی والی ریاست کے 18 فیصدی لوگ (مسلمان) اپنے مستقبل کو لیکر گھبرا گئے ہوں گے۔ عمر عبداللہ نے الزام لگایا کہ اگر مہنت آدتیہ ناتھ اپنے بیانات پر عمل کرنے لگے تو ہندوستان میں مسلمانوں کی آبادی صفر پر آجائے گی۔

یوگی ادتیہ ناتھ نے مسلمان عورتوں کی لاشوں کی عصمت دری کیلئے کہا تھا : عمر عبداللہ

معروف مصنف چیتن بھگت کے یوگی ادتیہ ناتھ پر ٹوئٹ کہ ’جب شرارتی لڑکے کو کلاس مونیٹر بنایا جاتا ہے تو وہ اچھا برتاؤ کرنے لگتا ہے‘ پر مسٹر عبداللہ نے جوابی ٹوئٹ میں کہا ’کیا یہ مرکزی سرکار پر بھی صادق آتا ہے۔ راجستھان، مہاراشٹر، جموں وکشمیر، مدھیہ پردیش، گوا اور دوسری ریاستوں کے بارے میں کیا خیال ہے؟‘۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز