تاریخی مغل روڈ: کشمیر-لداخ قومی شاہراہ پر آمدورفت پھر سے شروع

Apr 17, 2018 01:35 PM IST | Updated on: Apr 17, 2018 01:35 PM IST

سری نگر۔ جموں و کشمیر کا 86 کلو میٹر تاریخی مغل روڈ کو تازہ برفباری اور سڑکوں کی پھسلن کی وجہ سے بند کردیا گیا تھا ، جسے آج صبح ایک جانب سے آمدورفت کے لئے کھول دیا گیا ہے۔ اس کے علاوہ لداخ کو جوڑنے والی 300 کلو میٹر سری نگر-جموں قومی شاہراہ کو بھی گاڑیوں کی آمدورفت کے لئے کھول دیا گیا ہے۔

ٹرانسپورٹ پولیس کے افسر نے آج یو این آئی سے بات چیت کے دوران بتایا کہ مغل روڈ پر گاڑیوں کی آمدورفت شروع ہوگئی ہے۔ راجوری اور پونچھ کے ساتھ جنوبی کشمیر میں شوپیاں کو جوڑنے والی قومی شاہراہ کو بھی کھول دیا گیا ہے۔ پیر -کی -گلی کو اتوار کو برفباری اور پھسلن کی وجہ سے بند کردیا گیا تھا۔

تاریخی مغل روڈ: کشمیر-لداخ قومی شاہراہ پر آمدورفت پھر سے شروع

اس کے علاوہ لداخ کو جوڑنے والی 300 کلو میٹر سری نگر-جموں قومی شاہراہ کو بھی گاڑیوں کی آمدورفت کے لئے کھول دیا گیا ہے: فوٹو، یو این آئی۔

انہوں نے کہا کہ حادثات اور جام سے بچنے کے لئے سڑک پر صرف چھوٹی گاڑیوں کو چلنے کی اجازت دی گئی ہے۔ کیونکہ کچھ مقامات پر سڑک بہت زیادہ تنگ ہے اور گاڑیوں کو دونوں طرف سے برف کی دیواروں کے درمیان سے گزرنا پڑتا ہے۔

انہوں نے کہا کہ آج شوپیاں سے بفلیاز کے درمیان گاڑیاں چلیں گی۔ دوسری جانب سے کسی بھی قسم کی گاڑیوں کو آنے کی اجازت نہیں دی جائے گی۔ کچھ مقامات پر سڑکوں میں پھسلن کی وجہ سے گاڑیوں کو نو بجے سے چلنے کی اجازت دی گئی ہے۔ اس دوران 434 کلو میٹر طویل سری نگر -لیہہ قومی شاہراہ میں دونوں جانب سے چھوٹی گاڑیوں کی آمدورفت جاری ہے جبکہ بڑی گاڑیاں احتیاط کے طو پر ایک جانب سے چلیں گی۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز