ٹرمپ کا اعلان تانا شاہی پر مبنی ، عالم اسلام کے دل مجروح ، حکومت ہند اپنا موقف واضح کرے : فاروق عبداللہ

Dec 07, 2017 06:35 PM IST | Updated on: Dec 07, 2017 06:35 PM IST

سری نگر: جموں وکشمیر نیشنل کانفرنس کے صدر و رکن پارلیمان ڈاکٹر فاروق عبداللہ نے امریکہ کی طرف سے قبلہ اول بیت المقدس کو اسرائیلی دارالحکومت تسلیم کرنے کے اعلان کی شدید الفاظ میں مذمت کرتے ہوئے کہا ہے کہ امریکی صدر ڈونالڈ ٹرمپ کے تاناشاہی پر مبنی اس اعلان سے عالم اسلام کے دل مجروح ہوئے ہیں اور مذہبی جذبات کو ٹھیس پہنچائی گئی ہے۔ تمام امن پسند اور مہذب ممالک اس اقدام کی مذمت اور ملامت کررہے ہیں اور ٹرمپ کے اس اعلان کو یکسر مسترد کردیاہے۔

فاروق عبداللہ نے جمعرات کو یہاں جاری اپنے ایک بیان میں امریکہ کے اعلان کو بلاجواز اور غیر ذمہ دارانہ قرار دیتے ہوئے کہا ہے کہ یہ فلسطینی عوام کے حقوق پر شب خون مارنے کے مترادف ہے جو اقوام عالم کو کسی بھی صورت میں قابل قبول نہیں ہونا چاہئے۔انہوں نے کہا کہ تمام مہذب ممالک نے بھرپور طریقے سے فلسطینیوں کے ساتھ اپنے حمایت کا اعلان کیا ہے اور اہل جموں وکشمیر بھی فلسطین بھائیوں کے شانہ بہ شانہ ہیں۔ڈاکٹر فاروق عبداللہ نے مرکزی حکومت کو آڑے ہاتھوں لیتے ہوئے وہ امریکہ کے اس اعلان کے بارے میں اپنا موقف صاف صاف کرے، بھارت ہمیشہ فلسطین کے کاز اور علیحدہ فلسطینی مملکت کی حمایت کرتا آیا ہے۔

ٹرمپ کا اعلان تانا شاہی پر مبنی ، عالم اسلام کے دل مجروح ، حکومت ہند اپنا موقف واضح کرے : فاروق عبداللہ

نیشنل کانفرنس کے صدر و رکن پارلیمان ڈاکٹر فاروق عبداللہ : فائل فوٹو۔

انہوں نے کہا کہ امریکہ کا اعلان بین الاقوامی قانون اور اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل کی قراردادوں کی صریحاً خلاف ورزی ہے۔ انہوں نے کہا کہ ایسا کوئی بھی اقدام دنیا بھر کے مسلمانوں کو اشتعال دلا سکتا ہے جو نہ صرف خطے بلکہ دنیا کے امن، سلامتی اور استحکام کیلئے سنگین ہو سکتاہے۔ ڈاکٹر فاروق عبداللہ نے اُمید ظاہر کی کہ جمعہ کو منعقد ہونے والے سیکورٹی کونسل کی میٹنگ میں امریکہ کے اس اعلان کو مسترد کیا جائے ۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز