قومی اقلیتی کمیشن کی میٹنگ ، جیور اجتماعی آبروریزی کے ملزمان کی عدم گرفتاری پر اظہار تشویش

Jun 09, 2017 10:58 PM IST | Updated on: Jun 09, 2017 11:41 PM IST

نئی دہلی : سید غیور الحسن رضوی کی صدارت میں نو تشکیل شدہ قومی اقلیتی کمیشن کی میٹنگ میں اترپردیش کے جیور میں پیش آنے والے اجتماعی آبروریزی کے واقعہ میں ملوث ملزمان کی گرفتاری نہ ہونے پر شدید تشویش ظاہر کرتے ہوئے ہدایت دی گئی کہ متعلقہ حکام اس سلسلے میں ملزمان کی گرفتاری پر ہونے والی پیش رفت کی رپورٹ ہر 15 دن میں کمیشن کو پیش کریں۔

قومی اقلیتی کمیشن کی تشکیل نو کے بعد لوک نائک بھون میں واقع صدر دفتر میں یہ پہلی میٹنگ تھی جس میں کمیشن کے چیئرمین کے علاوہ کمیشن کے ممبران مسٹر جارج کوریئن، مسٹر سنیل سنگھی، محترمہ سولیکھا کمبھرے، مسٹر کستور خورشید کائکوباڑ اور دیگر حکام نے شرکت کی ۔

قومی اقلیتی کمیشن کی میٹنگ ، جیور اجتماعی آبروریزی کے ملزمان کی عدم گرفتاری پر اظہار تشویش

چیئرمین غیور الحسن کی ہدایت پر گوتم بدھ نگر کے ایس ایس پی اور مجسٹریٹ کی رپورٹیں کمیشن کو سونپ دی گئی ہیں۔ کمیشن کی میٹنگ میں ان رپورٹوں کا جائزہ لیا گیا، جس کے مطابق جیور میں اجتماعی آبروریزی کے متاثرین کو انسانی امداد تو بہم پہنچائی گئی ہيں ،لیکن آبروریزی کے مجرموں کو ابھی تک گرفتار نہیں کیا گيا ہے۔ جس پر کمیشن نے مجرموں کی گرفتاری میں ہونے والی پیش رفت کی رپورٹ طلب کی ور ایکسپریس وے کے اس سیکشن پر حفاظتی انتظامات سخت کرنے کی ہدایت دی جہاں پر اس طرح کے واقعات پیش آنے کے خدشات زیادہ ہیں۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز