سال 2016: دنیا بھر میں مارے گئے 122 صحافی ، ہندوستان میں پانچ صحافیوں کا ہوا قتل

Jan 01, 2017 07:37 PM IST | Updated on: Jan 01, 2017 07:37 PM IST

نئی دہلی : دنیا بھر میں 2016 میں 122 صحافی اور ميڈيااہلکارمارے گئے۔ ایک نئی رپورٹ کے مطابق ان میں سے 93 ميڈيااہلکار قتل، بم دھماکے اور فائرنگ جیسے واقعات میں مارے گئے جبکہ دیگر کی موت حادثات میں ہوئی۔ ہندوستان میں 2016 میں پانچ صحافی کی موت ہوئی اور فہرست میں ہندوستان آٹھویں مقام پر ہے۔ عراق اس فہرست میں سب سے اوپر ہے۔

انٹرنیشنل فیڈریشن آف جرنلسٹس نے اپنی سالانہ رپورٹ میں کہا ہے کہ افریقہ، امریکہ، ایشیا بحر الکاہل، یوروپ، مغربی ایشیا اور عرب دنیا کے 23 ممالک میں صحافی قتل، بم حملہ اور فائرنگ جیسے واقعات میں بے وقت موت کا شکار ہوئے۔

سال 2016: دنیا بھر میں مارے گئے 122 صحافی ، ہندوستان میں پانچ صحافیوں کا ہوا قتل

رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ 2015 میں قتل، بم حملہ اور فائرنگ جیسے واقعات میں 112 صحافی ہلاک ہو گئے تھے اور 2016 میں یہ تعداد گھٹ کر 93 ہوئی ہے۔ عراق اب بھی سر فہرست ہے ۔ وہاں 15 صحافی مارے گئے۔ عراق کے بعد افغانستان (13) اور میکسیکو (11) ہے۔ صحافی ٹریڈ یونینوں کے سب سے بڑے عالمی یونین کے شائع اعداد و شمار کے مطابق میکسیکو کے بعد یمن میں آٹھ، گوئٹے مالا میں چھ، شام میں چھ، ہندوستان اور پاکستان میں پانچ پانچ صحافی ہلاک ہو ئے۔

قتل، بم دھماکے اور فائرنگ جیسے واقعات میں 93 صحافیوں کے مارے جانے کے علاوہ برازیل کے 20 کھیل صحافیوں کی موت کولمبیا کے میڈلین شہر میں طیارہ حادثے میں ہوئی۔ جبکہ نو روسی صحافیوں کی موت فوجی طیارے حادثہ میں ہوئی۔ تاہم 2016 میں قتل، بم دھماکے اور فائرنگ جیسے واقعات میں مارے گئے صحافیوں کی تعداد 2015 کے مقابلے کم ہے۔

رپورٹ میں بتایا گیا ہے کہ ہندوستان میں 14 فروری کو جن سندیش ٹائمز کے بیورو چیف ترون مشرا کا قتل کر دیا گیا۔ ایک مقامی چینل کے صحافی اندردیو یادو کا 16 مئی کو قتل کر دیا گیا۔ دینک ہندوستان کے بیورو چیف راجدیو رنجن کا 13 مئی کو ، جے ہند کے بیورو چیف کشور دوے کا 22 اگست کو اور دینک بھاسکر کے صحافی دھرمیندر سنگھ کا 12 نومبر کو قتل کردیا گیا ۔ بھارت میں سال 2015 میں نشانہ بنا کر کیے گئے حملوں میں چھ صحافی مارے گئے تھے۔ ان میں 'آج تک چینل اور دینک جاگرن کے صحافی بھی شامل تھے۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز