کیفیات ایکسپریس حادثہ: ہر طرف چیخ و پکار اور افراتفری کا ماحول: عینی شاہدین

Aug 23, 2017 09:40 AM IST | Updated on: Aug 23, 2017 09:40 AM IST

اوریا / لکھنؤ۔  اعظم گڑھ سے پرانی دہلی  جا رہی کیفیات ایکسپریس آج علی الصبح اترپردیش کے اوریا ضلع کے اچھلدا اور پاتا اسٹیشن کے درمیان بے پہرہ ریلوے کراسنگ پر ڈمپر سے ٹکراگئی جس سے اس کے انجن سمیت دس ڈبے پٹری سے اتر گئے ۔ حادثہ میں 70 سے زائد مسافر وں کے زخمی ہونے کی اطلاع ہے۔ حادثہ کے وقت ٹرین میں سوار عینی شاہدین نے اس واقعہ پر کچھ اس طرح اپنے ردعمل کا اظہار کیا ہے۔

کیفیات ایکسپریس سے دہلی جا رہے اعظم گڑھ کے شکیل کے مطابق وہ اپنے ساتھی مسافروں کے ساتھ حادثہ کے وقت گہری نیند میں سورہے تھے کہ اچانک نیند کھلی تو مسافروں کی چیخ پکار سن کر ان کے پاؤں کے نیچے سے زمین کھسک گئی۔انہوں نے کہا کہ ہر طرف افراتفری کا ماحول تھا۔ شاہ گنج کے جمیل بھی دہلی جارہے تھے ۔ جمیل کا کہنا ہے کہ کچھا کھچ بھرے جنرل ڈبے میں لوگوں کو زیادہ چوٹیں آئی ہیں۔ انہیں بھی چوٹ لگی ہے۔ انہوں نے بتایا کہ حادثہ کے بعد مقامی باشندوں سے کافی مدد ملی حالانکہ  پولیس نے بھی موقع پر پہنچنے میں زیادہ تاخیر نہیں کی۔

کیفیات ایکسپریس حادثہ: ہر طرف چیخ و پکار اور افراتفری کا ماحول: عینی شاہدین

اوریا کے ایک ڈاکٹر کے مطابق زخمیوں کا علاج کیا جارہا ہے۔ سنگین طورپر زخمیوں کو اٹاوا کے سیفئی پی جی آئی ریفر کیا گیا ہے۔ پولیس سپرنٹنڈنٹ سنجیو تیاگی کے مطابق اپ اور ڈاون دونوں لائنوں پر ڈبے بکھر گئے ہیں۔ بجلی کے کھمبوں کوبھی نقصان پہنچا ہے اس لئے ٹرینوں کی آمدورفت کو بحال ہونے میں کئی گھنٹے لگیں گے۔ ریلوے ملازمین نے آمدورفت معمول پر لانے کیلئے کام شروع کردیا ہے۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز