کانوڑ یاترا کے دوران مسلم کاروباری بھی کر رہے بھنڈارا کیمپوں کا اہتمام

Jul 20, 2017 06:58 PM IST | Updated on: Jul 20, 2017 06:58 PM IST

میرٹھ ۔ کانوڑ یاترا کی نسبت ساون مہینے میں شیو راتری کے موقع  پر گنگا جل چڑھانے سے ہے ۔ ساون مہینے کی شروعات کے ساتھ  ہی کانوڑ یاتری  اپنے کندھوں پر کانوڑ رکھ کر ہردوار سے جل لانے نکل پڑتے ہیں ۔ ان کانوڑیوں کی خدمت اور سہولیات کے لئے جگہ جگہ کیمپوں کا اہتمام کیا جاتا ہے ۔ میرٹھ  شہر میں ایسے ہی کئی  کیمپ مسلم سماجی اور کاروباری تنظیموں کی جانب سے بھی منعقد کئے  جاتے ہیں ۔ ان کیمپوں کے اہتمام کے ذریعہ برسوں سے آپسی اتحاد اور محبت کی مثال پیش کی جا رہی ہے۔

 ساون کے مہینے میں کانوڑ یاترا کی شروعات کے ساتھ ہی مغربی اتر پردیش کے سبھی شہروں میں  بھنڈارا کیمپوں کا اہتمام کیا  جاتا ہے ۔ میرٹھ میں بھی اس طرح کے سینکڑوں کیمپوں کا انعقاد کیا جاتا ہے ۔ ان میں  کئی کیمپ مسلم خدمتگاروں اورسماجی تنظیموں کی جانب سے بھی لگائے جاتے ہیں ۔ ایسا ہی ایک خاص کیمپ شہر کے ہاپوڑ اڈا چوراہے پر مسلم کاروباریوں اور ویاپار سنگھ کی جانب سے گزشتہ 12 برسوں سے منعقد کیا جاتا رہا ہے ۔ علاقے کے مسلم کاروباری نہ صرف اس کیمپ کا اہتمام کرتے ہیں بلکہ  رضاکارانہ طور پر بھولوں کی خدمت بھی انجام دیتے ہیں ۔ مسلم خدمات گار مانتے ہیں کہ اس طرح سے ایک دوسرے کے تیوہار اور خوشیوں میں شامل ہوکر سماج میں آپسی اتحاد کا پیغام عام ہوتا ہے ۔  وہیں شہر کے ان راستوں سے ہو کر گزرنے والے کانوڑ یاتری خلوص اور محبت کے اس انداز سے خوش ہوکر اپنے تاثرات کا اظہار کرتے ہوئے کہتے ہیں کہ ہماری گنگا جمنی تہذیب کے رنگ مختلف مذاہب کے تہواروں میں نظر آتے ہیں ۔ مشترکہ تہذیب اور آپسی اتحاد اور محبت کے اسی رنگ کو ہندوستانیت کہتے ہیں ۔

کانوڑ یاترا کے دوران مسلم کاروباری بھی کر رہے بھنڈارا کیمپوں کا اہتمام

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز