عام آدمی پارٹی کا ای وی ایم معاملہ الیکشن کمیشن پر دباو ڈالنے کے لئے: کپل مشرا

Jun 22, 2017 03:36 PM IST | Updated on: Jun 22, 2017 03:36 PM IST

نئی دہلی۔  دہلی کے سابق وزیر کپل مشرا نے الزام لگایا ہے کہ عام آدمی پارٹی(آپ) نے الیکٹرانک ووٹنگ مشین (ای وی ایم ) کا معاملہ منفعت بخش عہدہ میں پھنسے اپنے اکیس ممبران اسمبلی کے معاملے سے توجہ ہٹانے کے لئے اچھالا ہے۔ مسٹر مشرا نے آج اپنے بلاگ میں ای وی ایم اورمنفعت بخش عہدہ معاملے کا انکشاف کرتے ہوئے کہا کہ آپ کے اکیس ممبران اسمبلی پر چلنے والے اس معاملے پر الیکشن کمیشن کسی بھی دن فیصلہ لے سکتا ہے۔ انہوں نے کہا کہ ان اکیس ممبران اسمبلی میں سے بیشتر کو یہ پتہ ہی نہیں ہے کہ انہیں پارلیمانی سکریٹری بنانے کا فیصلہ آخر لیا ہی کیوں گیا۔ ان ممبران اسمبلی کو یہ بھی پتہ نہیں ہے کہ الیکشن کمیشن میں اس معاملے کی سماعت مکمل ہوچکی ہے اور صرف فیصلہ آنا باقی ہے۔ اروند کیجریوال نے ان ممبران اسمبلی کو یہ کہہ رکھا ہے کہ ابھی یہ معاملہ کافی لمبا چلے گا لیکن کہاوت ہے کہ جھوٹ کے پاوں نہیں ہوتے۔ اسی طرح اس معاملے میں جیسے جیسے فیصلے کی گھڑی نزدیک آرہی ہے ، جھوٹ سے پردہ اٹھتا جارہا ہے۔

وزیر اعلی پر بدعنوانی کے الزام لگانے کے بعد آپ سے معطل کردئے گئے کراول نگر کے ممبراسمبلی نے لکھا ہے کہ ایک بات توہم تمام ممبران اسمبلی جانتے تھے کہ کوئی بھی ممبراسمبلی پارلیمانی سکریٹری بننے کے لئے یا عہدہ گنوانے کے لئے نہیں گیا تھا۔ ایسی کوئی ضروری نہیں تھی کہ ضابطوں کو توڑ کر جلدبازی میں ممبران اسمبلی کی رکنیت خطرے میں ڈالی جائے۔ اس پر بھی خاص بات یہ ہے کہ وزیر اعلی کے پالیمانی سکریٹری کا عہدہ تھا لیکن اس پر کسی کی تقرری نہیں کی گئی۔ جو عہدے نہیں تھے اور جن کے لئے قانون لانا ضروری تھا ، انہیں پر غیر قانونی تقرریاں کی گئیں ۔اس معاملے میں اشیش تلوار ، اشیش کھیتان اور خود مسٹر کیجریوال نے ہی فیصلے لئے۔ مسٹر مشرا نے لکھا ہے کہ لفٹننٹ گورنر کے اختیارات کے خلاف مسٹر کیجریوال عدالت تک گئے جن کی طاقتوں کو جن لوک پال اور سوراج جیسے قوانین نے نہیں مانا۔اس معاملے میں انہیں حقوق کے سہارے بچنے کی ناکام کوشش کی گئی۔ دلیل یہ دی گئی کہ جب لفٹننٹ گورنر کی اجازت کے بغیر ہم پارلیمانی سکریٹری بنائے ، اس لئے انہیں پارلیمانی سکریٹری نہ مانا جائے اور ان کی رکنیت رد نہ کی جائے ۔ یہ بچکانہ دلیل ہے۔

عام آدمی پارٹی کا ای وی ایم معاملہ الیکشن کمیشن پر دباو ڈالنے کے لئے: کپل مشرا

ان اکیس ممبران اسمبلی کی رکنیت پر تلوار لٹکی ہوئی ہے اور یہ کسی بھی دن جاسکتی ہے۔ اس معاملے میں جب پارٹی پھنس چکی ہے تو الیکشن کمیشن سے لڑائی کے لئے ای وی ایم کا معاملہ کھڑا کیا گیا ۔ یہ سب عوام کو یہ دکھانے کے لئے تھا کہ ہم الیکشن کمیشن سے لڑ رہے ہیں۔ اس لئے ہمارے ممبران اسمبلی کی رکنیت رد ہورہی ہے ۔ الیکشن کمیشن کو ای وی ایم کے ذریعہ دباو میں لانے کی کوشش ہے لیکن ایسے تماشوں سے کب تک بچایا جاسکتا ہے۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز