کرناٹک انتخابات : آر ایس ایس کے گورنر سے آپ امید بھی کیا کرسکتے ہیں : کیپٹن امریندر سنگھ

May 17, 2018 10:23 PM IST | Updated on: May 17, 2018 10:23 PM IST

چنڈی گڑھ : کرناٹک میں بھارتیہ جنتاپارٹی (بی جےپی )کو حکومت بنانے کی دعوت دینے کے کرناٹک کے گورنر واجوبھائی والا کے فیصلہ کو پنجاب کے وزیر اعلی کیپٹن امرندرسنگھ نے جمہوریت اور آئین کا قتل قراردیتے ہوئے آج کہا کہ آرایس ایس کے گورنر سے آپ امید بھی کیا کرسکتے ہیں ۔ کیپٹن امرندر نے یہاں جاری بیان میں کہا کہ اقلیت والی پارٹی کو حکومت بنانے کی دعوت دیکر گورنرنے جمہوریت اور آئین کا قتل کیاہے ۔

انھوں نے کہاکہ یہ بھی حیرت ناک ہے کہ گورنر نے بی جے پی کو اعتماد کا ووٹ حاصل کرنے کے لئے 15دن کی مہلت دی ہے تاکہ اپوزیشن کو توڑا جاسکے اور ممبران اسمبلی کی خریدوفروخت کی جاسکے ۔پورے واقعہ کو افسوسناک قراردیتے ہوئے وزیر اعلی نے کہا کہ جوہورہاہے وہ نہ صرف تکلیف دہ ہے ،بلکہ ہندستان کے لئے خطرناک بھی ہے ۔انھوں نے کہا،’’ہم نہیں چاہتے کہ ہندستان پاکستان کی طرح بنے جہاں تاناشاہوں اور فوج نے جمہوریت کو ہرقدم پر نقصان پہنچایاہے ۔ ‘‘

کرناٹک انتخابات : آر ایس ایس کے گورنر سے آپ امید بھی کیا کرسکتے ہیں : کیپٹن امریندر سنگھ

کپٹن امریندر سنگھ ۔ فائل فوٹو

کیپٹن امرندر سنگھ نے کہا کہ ملک کرناٹک کے گورنر سے جانناچاہتاہے کہ کس بنیاد پر انھوں نے بی جےپی کو حکومت بنانے کی دعوت دی جبکہ کسی کوبھی واضح اکثریت نہ ملنے کی صورت میں حال ہی میں گوا اورمنی پور کی مثالیں واضح طورپر الیکشن کے بعد اکثریت والے اتحاد کے حق میں ہیں ۔حکومت کو اکثریت والی پارٹیوں کو حکومت بنانے اور فورا اعتمادکا ووٹ حاصل کرنے کو کہنا چاہئے تھا۔

انھوں نے امید ظاہر کی کہ سپریم کورٹ اب آئینی اصولوں کا تحفظ کریگا ۔وزیر اعلی نے ٹویٹ کرکے کہا،’’کرناٹک میں جمہوریت کا قتل کیا گیا ہے ۔یہ ہندستان کے لئے ٹھیک نہیں ہے ۔سب کی نگاہیں سپریم کورٹ پر ہیں کہ وہ آئینی اقدار ،جن کی بنیاد پر ہمارا ملک ٹکاہے ،کا تحفظ کریگی ۔‘‘

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز