کٹھوعہ عصمت دری وقتل کیس میں عدالت نے ملزم پرویش کا میڈیکل بورڈ سے معائنہ کرانے کا حکم دیا

Jun 12, 2018 07:12 PM IST | Updated on: Jun 12, 2018 07:12 PM IST

پٹھانکوٹ: پٹھانکوٹ ضلع عدالت نے منگل کے روز کٹھوعہ عصمت دری اور قتل معاملہ میں جموں وکشمیر پولیس کی درخواست پر ایک ملزم کا میڈیکل بورڈ سے ٹسٹ کرانے کا حکم دیا ہے تاکہ یہ پتہ لگایاجاسکے کہ آیا وہ نابالغ ہے یا بالغ؟۔وکلاء صفائی نے پٹھانکوٹ سیشن کورٹ میں پرویش کمار عرف منو نامی ملزم جوکہ جیل میں زیرحراست ہے، کو نابالغ قرار دینے کے لئے عرضی دائر کی تھی، جس پرجموں وکشمیر پولیس کی کرائم برانچ نے 11جون کو اعتراضات دائر کئے اور ساتھ ہی ضمنی درخواست دی جس میں عدالت سے استدعا کی گئی کہ اس بات کا پتہ لگانے کہ ملزم بالغ یانابالغ ہے، اس کا میڈیکل بورڈ کے ذریعہ طبی معائنہ کرایاجائے۔

ذرائع کے مطابق منگل کو دن ڈیڑھ بجے تک پرویش کمار کو نابالغ قرار دینے کے لئے دائر عرضی پر بحث ہوئی جس میں وکلاء صفائی اور کرائم برانچ پراسیکیوٹر نے حصہ لیا، کئی گھنٹوں تک مفصل بحث اور دونوں وکلاء کی دلائل سننے کے بعد سیشن کورٹ نے حکم دیا کیا 2جولائی2018تک میڈیکل بورڈ کے ذریعہ پرویش کمار عرف منوملزم کا جوینائل ٹسٹ کرایاجائے ۔دریں اثناء منگل کے روز بھی اُسی گواہ کی ہی جرح جاری رہی جس کا پیرکو جرح ہوئی تھی۔

کٹھوعہ عصمت دری وقتل کیس میں عدالت نے ملزم پرویش کا میڈیکل بورڈ سے معائنہ کرانے کا حکم دیا

ایڈووکیٹ آسیم سہنی نے یواین آئی کو بتایاکہ ’’ابھی ایک ہی گواہ کی جرح چل رہی ہے اور کل یعنی بدھوار کو بھی یہ جاری رہے گی، کیونکہ آج زیادہ تر پرویش کمار کو نابالغ قرار دینے کے لئے دائر عرضی پر بھی بحث ہوئی‘‘۔انہوں نے مزید بتایاکہ عدالت نے 2جولائی 2018تک میڈیکل بورڈ سے جوینائل ٹسٹ کرانے کا حکم دیا ہے اب یہ ملزم کے وکلاء پر مبنی ہے وہ کب تک کراتے ہیں۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز