سہارنپور میں تشدد کے لئے ذات پات کی سیاست ذمہ دار: کیشور پرسادموریہ

May 24, 2017 10:24 PM IST | Updated on: May 24, 2017 10:24 PM IST

جھانسی: اترپردیش کے نائب وزیر اعلی کیشو پرساد موریہ نے سہارنپور میں پرتشدد واقعات کے لئے سماجوادی پارٹی (ایس پی) اور بہوجن سماج پارٹی (بی ایس پی) کی ذات پات پر مبنی سیاست کو ذمہ دار ٹھہراتے ہوئے کہا کہ یو پی حکومت فسادات کی اعلی سطحی جانچ کرا رہی ہے اور جو بھی مجرم پائے جائيں گے ان کو بخشا نہیں جائے گا۔

جین سماج کے مذہبی پروگرام میں شامل ہونے کے لئے یہاں پہنچنے پر مسٹر موریہ نے کہا کہ سہارنپور کے واقعات کے لئے بی ایس پی اور ایس پی کی ذات پات پر مبنی سیاست ذمہ دار ہے۔ انہوں نے کہا کہ ہم ترقیات کی سیاست کو فروغ دے رہے ہیں۔ حکومت سہارنپور کے واقعات کے تئيں سنجیدگی سے لے رہی ہے اور ہم فساد کو روک کر اس کے ملزمان کو پکڑ بھی لیں گے۔ انہوں نے کہا کہ جو اس طرح کے واقعات کو انجام دینے کی کوشش کریں گے، ان کے خلاف سخت سے سخت کارروائی کی جائے گی، چاہے وہ کتنے بھی بڑے لیڈر کیوں نہ ہوں۔

سہارنپور میں تشدد کے لئے ذات پات کی سیاست ذمہ دار: کیشور پرسادموریہ

مسٹر موریہ نے کہا کہ بی ایس پی کی سپریمو مایاوتی کے خلاف کارروائی ہوگی۔ انہوں نے کہا کہ جس کی وجہ سے فرقہ وارانہ فسادات ہوں گے اس کو بخشا نہیں جائے گا۔ محترمہ مایاوتی کل وہاں گئی تھیں اور ان کے جانے کے بعد وہاں پر تشدد پھوٹ پڑا۔ واقعہ کی تحقیقات کے لئے اعلی سطحی انکوائری ٹیم سہارنپور میں موجود ہے۔ انہوں نے تمام لوگوں سے امن و بھائی چارہ بنائے رکھنے کی اپیل کرتے ہوئے کہا کہ افسر ان سہارنپور میں تشدد کی وجوہات کی بھی تحقیقات کر رہے ہیں اور جلد ہی وہاں حالات معمول پر آ جائیں گے۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز