روہنگیا مسلمان معاملہ میں ہندوستان کو ویلن کی طرح پیش کرنا ملک کے شیبہ کو خراب کرنے کی سازش : کرن رجیجو

Sep 13, 2017 10:13 PM IST | Updated on: Sep 13, 2017 10:13 PM IST

نئی دہلی: امور داخلہ کے وزیر مملکت کرن رجیجو نے آج کہا کہ ایک سازش کے تحت روہنگیا مسلمانوں کے معاملے پر جان بوجھ کر ہندوستان کا امیج خراب کرنے کی کوشش کی جارہی ہے۔ حکومت کے روہنگیا مسلمانوں کو ہندوستان سے باہر بھیجنے کے اعلان کے بعد سے ہی یہ موضوع گرم ہوگیا ہے اور یہاں رہنے والے روہنگیا مسلمانوں نے اس کے خلاف سپریم کورٹ کا دروزاہ کھٹکھٹایا ہے۔

مسٹر رجیجو نے ٹوئٹ کیا کہ روہنگیا معاملے پر ہندوستان کو ویلن کی طر ح پیش کرنا ملک کے امیج کو خراب کرنے کی سازش ہے ۔یہ ہندوستان کی سلامتی کو کمزور کرتا ہے۔ مرکزی وزیر کا یہ بیان روہنگیا مسلمانوں کے معاملے پر اقوام متحدہ حقوق انسانی کمیشن کے سربراہ کے اس تبصرہ کے بعد آیا ہے جس میں انہوں نے ہندوستان کے موقف کی نکتہ چینی کی ہے۔

روہنگیا مسلمان معاملہ میں ہندوستان کو ویلن کی طرح پیش کرنا ملک کے شیبہ کو خراب کرنے کی سازش : کرن رجیجو

حکومت کاکہنا ہے کہ روہنگیا فرقہ کے لوگ غیر قانونی طورپر ملک میں رہ رہے ہیں اور انہیں ان کے ملک واپس بھیجا جائے گا۔ ساتھ ہی حکومت نے یہ بھی واضح کیا ہے کہ ان لوگوں کو مناسب طریقہ کار کے تحت ہی واپس بھیجا جائے گا۔ سرکاری اعدادو شمار کے مطابق تقریباً چالیس ہزار روہنگیا ہندوستان میں موجود ہیں جو بالخصوص دہلی، اترپردیش، ہریانہ، راجستھان، جموں اور حیدرآباد میں رہ رہے ہیں۔ ان میں سے سے صرف چودہ ہزار کے پاس پناہ گزینوں کے دستاویز ہیں ۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز