غیر ضمانتی جرم ، تین سال کی سزا ، پڑھیں تین طلاق سے متعلق بل میں کیا کیا ہیں بندوبست ؟

پارلیمنٹ کے لوک سبھا میں تین طلاق سے متعلق بل پاس کردیا گیا ہے ، جس میں تین طلاق کو جرائم کے زمرہ میں رکھا گیا ہے ۔

Dec 28, 2017 07:58 PM IST | Updated on: Dec 28, 2017 07:58 PM IST

نئی دہلی : پارلیمنٹ کے لوک سبھا میں تین طلاق سے متعلق بل پاس کردیا گیا ہے ، جس میں تین طلاق کو جرائم کے زمرہ میں رکھا گیا ہے ۔ حالانکہ اس بل پر حکومت کا کہنا ہے کہ بل کا مقصد شادی شاہ مسلم خواتین کیلئے جنسی مساوات اور جنسی انصاف بنائے رکھنا ہے ۔

تاہم اس معاملہ پر آل انڈیا مسلم پرسنل لا بورڈ اور دیگر اقلیتی تنظیموں کا کہنا ہے کہ یہ اقلیتوں کے حقوق کی خلاف ورزی ہے ۔ متعدد سماجی کارکنان نے بھی اس معاملہ پر سپریم کورٹ کے فیصلہ پر سوالات اٹھائے ہیں۔

غیر ضمانتی جرم ، تین سال کی سزا ، پڑھیں تین طلاق سے متعلق بل میں کیا کیا ہیں بندوبست ؟

آخر بل میں کیا ہے ، آئیے ہم ایک نظر ڈالتے ہیں ؟۔

بل کے مطابق ایک مسلم شخص جو اپنی بیوی کو تین طلاق دیتا ہے تو اس کو تین سال جیل کی سزا ہوگی۔

Loading...

متاثر خواتین مجسٹریٹ سے نابالغ بچوں کے تحفظ کی بھی اپیل کرسکتی ہیں اور مجسٹریٹ اس معاملہ پر حتمی فیصلہ کریں گے۔

تین طلاق ایک غیر ضمانتی اور سنگین جرم ہے جو اس بل کے تحت تین سال کی سزا کی وجہ بن سکتا ہے۔

تین بھی طرح کا تین طلاق بول کر ، لکھ کر یا ای امیل ، ایس ایم ایس اور وہاٹس ایپ جیسے الیکٹرونک ذرائع سے غیر قانونی اور ان ویلڈ ہوگا ۔

اس بل کے تحت شوہر کو اپنی بیوی اور بچوں کیلئے امدادی رقم یا پھر گزارہ بھتہ دینا ضروری ہوگا ۔

Loading...

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز