صدارتی انتخابات کے لئے لالو پرساد یادو نے بھی داخل کیا پرچہ نامزدگی

Jun 21, 2017 08:59 PM IST | Updated on: Jun 21, 2017 08:59 PM IST

نئی دہلی : آئندہ 17 جولائی کو ہونے والے صدارتی انتخابات کے لئے لالو پرساد یادو نے پرچہ نامزدگی داخل کیا ہے۔ تاہم یہ راشٹریہ جنتا دل کے صدر نہیں، بلکہ بہار کے سارن ضلع کے رہائشی ہیں ، جنہوں نے بدھ کو پرچہ نامزدگی داخل کیا ۔ لوک سبھا سکریٹریٹ سے موصولہ اطلاعات کے مطابق لالو پرساد یادو نے پرچہ نامزدگی داخل کرتے ہوئے ووٹر کے طور پر رجسٹرڈ پارلیمانی حلقہ ووٹر لسٹ میں اپنا اندراج نمبر اور 15000 روپے ضمانت کی رقم جمع کی ہے۔ اتفاق ہے کہ یہ بھی بہار ہی آتے ہیں اور سارن ضلع کے رہائشی ہیں۔

بدھ کو دو لوگوں نے صدر کے عہدے کے لئے پرچہ نامزدگی داخل کئے ، جس میں لالو پرساد یادو کے علاوہ تمل ناڈو کے دھرم پوری ضلع کے انگی شری رام چندرن شامل ہیں۔سیکرٹریٹ سے موصولہ معلومات کے مطابق اب تک 25 افراد صدر کے لئے ہونے والے انتخابات کے لئے کاغذات نامزدگی داخل کر چکے ہیں۔

صدارتی انتخابات کے لئے لالو پرساد یادو نے بھی داخل کیا پرچہ نامزدگی

صدارتی انتخابات کے لئے کاغذات نامزدگی عمل شروع ہونے کے پہلے دن 6 لوگوں نے پرچہ نامزدگی داخل کئے تھے ، جس میں ممبئی کے پٹیل جوڑے سائرہ بانو محمد پٹیل اور محمد پٹیل عبدالحمید شامل ہیں۔علاوہ ازیں تمل ناڈو کے کے پدراجن، مدھیہ پردیش کے آنند سنگھ کشواہا، تلنگانہ کے اے بالا راج اور پونے کے كونڈیكر وجے پرکاش نے بھی صدارتی انتخابات کے لئے اپنا پرچہ نامزدگی داخل کیا ۔

تاہم ان سب کا پرچہ نامزدگی منسوخ ہونا طے مانا جا رہا ہے ، کیونکہ اس کے لئے 50 تجویز کنندگان اور تجویز کے اتنے ہی حامیوں کے دستخط کی لازمی شرط ہے۔ لوک سبھا، راجیہ سبھا اور ریاستوں کی اسمبلیوں کے منتخب اراکین ہی صدارتی انتخابات میں ووٹ دینے کی اہل ہوتے ہیں ۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز