جموں ۔ کشمیر : لشکر طیبہ کے دہشت گرد کی موت سے بہن کی شادی کا جشن ماتم میں تبدیل

پولیس نے بتایا کہ لیاقت احمد لون ، کپواڑہ کے ہندواڑہ میں منگل کی صبح سکیورٹی فورسز کے ساتھ ہوئے انکاؤنٹر میں ہلاک ہوئے لشکر طیبہ کے دو دہشت گرددوں میں سے ایک ہے۔

Sep 11, 2018 08:09 PM IST | Updated on: Sep 11, 2018 08:21 PM IST

جموں ۔ کشمیر میں کپواڑہ ضلع میں سکیورٹی فورسز کے ساتھ انکاؤنٹر میں دلہن کے دہشت گرد بھائی کی موت کے بعد اہل خانہ کیلئے شادی کا جشن ماتم میں تبدیل ہو گیا۔ پولیس نے بتایا کہ لیاقت احمد لون ، کپواڑہ کے ہندواڑہ میں منگل کی صبح سکیورٹی فورسز کے ساتھ ہوئے انکاؤنٹر میں ہلاک ہوئے لشکر طیبہ کے دو دہشت گرددوں میں سے ایک ہے۔ اہل خانہ نے بتایا کہ لون کی موت کی خبر اس وقت آئی جب بارہمولہ کے سوپور علاقے میں اس کے گھر پر اس کی بہن کی شادی کی تیاریاں چل رہی تھیں۔ انہوں نے بتایا کہ اس کی بہن کی شادی منگل کو ہونی تھی۔ اس کیلئے کئ رشتہ دار اور دوست ان کے گھر پر آئے تھے لیکن لون کی موت کی خبر سے جشن ماتم میں تبدیل ہو گیا۔

مہلوک کے گھر کے کچھ لوگوں نے دعوی کیا ہے کہ لون اس سال کی شروعات سے لاپتہ تھا اور دہشت گروہ میں شامل تھا۔ پولیس ترجمان نےبتایا کہ انکاؤنٹر میں مارے گئے دوسرے دہشت گرد کی پہچان کپواڑہ ضلع شارٹ پورہ علاقے کے لینگیٹ کے مقامی فرقان راشد لون عرف عادل کے طور پر ہوئی ہے۔

جموں ۔ کشمیر : لشکر طیبہ کے دہشت گرد کی موت سے بہن کی شادی کا جشن ماتم میں تبدیل

علامتی تصویر

انہوں نے بتایا کہ لیاقت لون عرف عمر خالد سوپور کے ہروان علاقے کا رہنے والا تھا۔ پولیس نے بتایا کہ لون کی لاش منگل دوپہر کو اس کے اہل خانہ کو سونپ دی گئی تھی۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز