تین دن کی ریکی کے بعد امرناتھ یاترا پر کیا گیا حملہ ، سبھی حملہ آور لشکر طیبہ کے دہشت گرد تھے  

Jul 11, 2017 09:49 AM IST | Updated on: Jul 11, 2017 09:49 AM IST

نئی دہلی : جموں و کشمیر کے اننت ناگ میں امرناتھ یاتریوں پر حملے کے خلاف آج ریاست میں بند کا اعلان کیا گیا ہے ۔ دہشت گردانہ حملے کی مخالفت میں ریاست میں پینتھرس پارٹی نے بند کا اعلان کیا ہے ۔ اطلاعات کے مطابق لشکر طیبہ کے ساتھ حزب المجاہدین نے مل کر دہشت گردانہ حملہ کیا تھا ۔ آج دوپہر 11 بجے وزارت داخلہ میں ایک اہم میٹنگ ہوگی ۔

نیوز 18 ذرائع کے مطابق حملہ کرنے والے تمام دہشت گرد لشکر کے تھے، لیکن انہیں مقامی مدد حزب المجاہدین کے دہشت گردوں نے فراہم کی تھی ۔ دہشت گرد بس کے اندر اندر گھسنا چاہتے تھے تاکہ زیادہ سے زیادہ یاتریوں کو نقصان پہنچا سکیں ۔

تین دن کی ریکی کے بعد امرناتھ یاترا پر کیا گیا حملہ ، سبھی حملہ آور لشکر طیبہ کے دہشت گرد تھے  

ذرائع نے یہ بھی بتایا کہ دہشت گردوں نے دو سے تین دن اس پورے علاقے کی ریکی کی تھی، دہشت گرد یہ جاننا چاہتے تھے کہ آخر کون سی گاڑی سیکورٹی کے بغیر نکلتی ہے ۔ بتایا جارہا ہے کہ یاتریوں کو لے کر کچھ بسیں سیکورٹی کے بغیر نکل رہی تھیں ۔ دہشت گردوں نے اس بات کا فائدہ اٹھایا ۔

صدر پرنب مکھرجی نے بھی معصوم یاتریوں پر حملے کی مذمت کی ہے ۔ جموں کشمیر کے گورنر این این ووہرا سری نگر میں ایک میٹنگ کر کے حالات کا جائزہ لیں گے ۔ ادھر حملوں کے بعد ہری دوار سمیت ملک کے دیگر حصوں میں كانوڑ یاترا کی حفاظت اور چوکس کر دی گئی ہے ۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز