ایل جی نے کیجریوال حکومت کی 40 بنیادی سرکاری سہولیات گھروں تک پہنچانے کی تجویز کی خارج

دہلی کے لیفٹیننٹ گورنر انل بیجل نے بنیادی سرکاری خدمات جیسے پیدائشی سرٹیفکیٹ، لائسنس، پنشن، فلاحی اسکیم، راشن کارڈ وغیرہ لوگوں کو گھر پر دستیاب کرانے کی دہلی حکومت کےمجوزہ منصوبہ کو مسترد کر دیا ہے۔

Dec 26, 2017 11:39 PM IST | Updated on: Dec 26, 2017 11:42 PM IST

نئی دہلی : دہلی کے لیفٹیننٹ گورنر انل بیجل نے بنیادی سرکاری خدمات جیسے پیدائشی سرٹیفکیٹ، لائسنس، پنشن، فلاحی اسکیم، راشن کارڈ وغیرہ لوگوں کو گھر پر دستیاب کرانے کی دہلی حکومت کےمجوزہ منصوبہ کو مسترد کر دیا ہے۔ دہلی کے نائب وزیر اعلی منیش سسوديا نے آج ایک ٹويٹ کرکے بتایا کہ لیفٹننٹ گورنر نے ان بنیادی سرکاری خدمات کے گھروں تک پہنچانے سے متعلق مجوزہ منصوبےکو مسترد کر دیا ہے۔

انہوں نے مسٹر بیجل کے اس فیصلے پر طنز کرتے ہوئے کہا کہ یہ فیصلہ زمینی حقیقت کو جانے بغیر کیا گیا ہے کیونکہ جب دہلی حکومت نے اس منصوبہ کا اعلان کیا تھا تب دارالحکومت کے ہر طبقہ کے لوگوں نے اس کا خیر مقدم کیا تھا۔مسٹر سسودیا نے کہا کہ نائب گورنر نے اس تجویز کو نظر ثانی کے لئے یہ نوٹ لگا کر واپس بھیجا ہے کہ تمام خدمات پہلے ہی سے ڈجيٹل ہیں۔تاہم، انہوں نے کہا کہ ان سہولیات کے ڈیجیٹل ہونے کے باوجود سرکاری دفتروں کے باہر لوگوں کی لمبی لائنیں لگتی ہیں اور لوگوں کو اپنے ساتھ دستاویزات کو لے کر پریشان ہونا پڑتا ہے۔

ایل جی نے کیجریوال حکومت کی 40 بنیادی سرکاری سہولیات گھروں تک پہنچانے کی تجویز کی خارج

دراصل دہلی حکومت اور مرکز کے درمیان اختیارات کے سلسلے میں کافی کشدیگی چل رہی ہے اور عام آدمی پارٹی لیفٹننٹ گورنر کے اس فیصلے کو اسی مسئلے سے جوڑ کر دیکھ رہی ہے۔ اس منصوبہ کو اگلے تین چار ماہ میں شروع کیا جانا تھا اور ایسا کرنے سے دہلی باشندوں کو 40 مختلف خدمات کے لئے دفتروں کے چکر لگانے نہیں پڑتے۔

Loading...

Loading...

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز