نکسلی لیڈر پوڈیم پنڈا کے بیان کے بعد دہلی یونیورسٹی کی پروفیسر نندنی سندر کی گرفتاری کا مطالبہ شروع

May 19, 2017 12:19 PM IST | Updated on: May 19, 2017 12:20 PM IST

نئی دہلی : لیگل رائٹس آبزرویٹری (ایل آر او ) نے دہلی یونیورسٹی کی پروفیسر نندنی سندر اور سماجی کارکن بیلا بھاٹیہ کی فوری گرفتاری اور ان کے خلاف مقدمہ چلائے جانے کا مطالبہ کیا ہے۔ چھتیس گڑھ کے ڈی جی پی اور وزارت داخلہ سے یہ مطالبہ کیا گیا ہے۔ نکسلیوں کے دلیرجنتانا سرکار میں ملیشیا ڈپٹی کمانڈر پوڈیم پنڈا کی خودسپردگی کے بعد پولیس کو دیے گئے بیان کی بنیاد پر ایل آر او نے یہ مطالبہ کیا ہے۔

ایل آر او کے کنوینر وجے جوشی کا کہنا ہے کہ پوڈیم پنڈا نے اپنے بیان میں کہا ہے کہ وہ دہلی یونیورسٹی کی پروفیسر نندنی سندر اور سماجی کارکن بیلا بھاٹیہ کو کئی مرتبہ نکسلیوں سے ملوانے کے لئے لے گیا ہے۔ علاوہ ازیں پنڈا نے پولیس کو دیگر کئی اہم معلومات بھی دی ہیں ۔ خیال رہے کہ پوڈیم پنڈا تاڑمیٹلا اور بركاپال سمیت 19 نکسلی وارداتوں میں مطلوب تھا۔

نکسلی لیڈر پوڈیم پنڈا کے بیان کے بعد دہلی یونیورسٹی کی پروفیسر نندنی سندر کی گرفتاری کا مطالبہ شروع

image source-twitter

جوشی نے بتایا کہ جلد ہی ان کی تنظیم کا ایک وفد اس معاملے میں مرکزی وزیر داخلہ راج ناتھ سنگھ اور قومی سلامتی کے مشیر اجیت ڈوبھال سے ملاقات کرے گا اور پنڈا، نندنی سندر اور بیلا بھاٹیہ کا نارکو ٹیسٹ کرانے اور آمنے سامنے بٹھا کر جانچ کا مطالبہ کیا جائے گا۔

قابل ذکر ہے کہ لیگل رائٹس آبزرویٹری ایک آزاد ادارہ ہے ، جو ملک مخالف سرگرمیوں پر نہ صرف نظر رکھتی ہے، بلکہ اسے روکنے کے لئے قانونی عمل کا سہارا بھی لیتی ہے۔ حال ہی میں ایل آر او نام اس وقت بحث میں آیا تھا، جب نکسلیوں نے ایک مبینہ خط جاری کر کے اس کے عہدیداروں کو موت کا فرمان سنایا تھا۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز