لکھنو انکاونٹر کی عدالتی جانچ شروع ، 13 اپریل تک ایس ڈی ایم سنجے پانڈے کریں گے بیانات درج

Apr 02, 2017 09:53 AM IST | Updated on: Apr 02, 2017 09:53 AM IST

لکھنو : اترپردیش کی راجدھانی لکھنو میں ہوئے مبینہ انکاونٹر کی عدالتی جانچ شروع ہوگئی ہے ۔ ضلع مجسٹریٹ پریہ درشنی کی ہدایت پر یہ جانچ ایس ڈی ایم سنجے پانڈے کررہے ہیں ۔ خیال رہے کہ 8 مارچ کو لکھنو کے ٹھاکر گنج میں پولیس نے ایک مبینہ انکاونٹر کے دوران سیف اللہ کو ہلاک کردیا تھا ۔ انکاونٹر کے بعد سے ہی مختلف حلقوں کی جانب سے اس پر سوالات اٹھائے جارہے تھے۔ یہی نہیں علاقہ میں رہنے والے لوگوں اور پولیس کی کہانی میں بھی کافی فرق سامنے آرہا تھا۔

میڈیا رپورٹس کے مطابق مبینہ انکاونٹر کے سلسلہ میں 13 اپریل تک کوئی بھی شخص اپنا بیان درج کراسکتا ہے۔ قابل ذکر ہے کہ سیف کے داعش سے وابستہ ہونے کا بھی دعوی کیا جارہا تھا ، مگر یوپی پولیس نے خود ہی اس کو خارج کردیا تھا۔ ریاست کے اے ڈی جی لا اینڈ آرڈر دلجیت چودھری نے کہا تھا ان لوگوں کو کسی دہشت گردانہ تنظیم کی حمایت حاصل نہیں تھی ۔ساتھ ہی ساتھ دلجیت چودھری نے یہ بھی دعوی کیا تھا یہ لوگ انٹرنیٹ، سوشل میڈیا اور ویب سائٹ کے ذریعہ آئی ایس سے متاثر ہوئے تھے اور 'خراسان گروپ بنا کر خود اپنی شناخت بنانا چاہتے تھے۔

لکھنو انکاونٹر کی عدالتی جانچ شروع ، 13 اپریل تک ایس ڈی ایم سنجے پانڈے کریں گے بیانات درج

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز