لکھنو کی آفرین روف نے بھگود گیتا پاٹھ مقابلہ میں حاصل کی پہلی پوزیشن ، مذہبی ہم آہنگی کی بنی مثال

Dec 25, 2017 07:28 PM IST | Updated on: Dec 25, 2017 07:30 PM IST

لکھنو : ملک میں مذہب کے نام پر جہاں کچھ شرپسند عناصر کےذریعہ نفرت پھیلائی جارہی ہے اور فرقہ وارانہ ہم آہنگی کو خراب کرنے کی کوششیں کی جارہی ہیں ، وہیں کچھ ایسے بھی لوگ ہیں جو مذہبی ہم آہنگی کی مثال بن کر ابھر رہے ہیں۔ ایک ایسی ہی مثال پیش کی ہے اترپردیش کی راجدھانی لکھنو کی آفرین روف نے ۔

لکھنو کے محکمہ تعلیم کی جانب سے منعقدہ بھگود گیتا پاٹھ مقابلہ میں شہر کی آفرین روف نے بازی ماری ہے ۔ آفرین کی اس کامیابی نے سبھی لوگوں کا دل جیت لیا ہے۔ تاہم یہ پہلا موقع نہیں ہے جبکہ کسی مسلم لڑکی یا لڑنے کے بھگود گیتا مقابلہ میں اول پوزیشن حاصل کی ہو۔

لکھنو کی آفرین روف نے بھگود گیتا پاٹھ مقابلہ میں حاصل کی پہلی پوزیشن ، مذہبی ہم آہنگی کی بنی مثال

اس سے قبل 2015 میں ممبئی کے میرا روڈ کے ایک اسکول میں پڑھنے والی 12 سالہ مریم نے بھی گیتا پاٹھ کے مقابلہ میں پہلی پوزیشن حاصل کرکے سب کو حیران کردیا تھا۔ یہی نہیں اسی سی راجستھان میں بھگود گیتا سے متعلق ایک مقابلہ میں 16 سال کے ایک مسلم طالب علم ندیم خان نے پہلا مقام حاصل کیا تھا ۔علاوہ ازیں اس مقابلہ میں دیگر دو پوزیشن بھی مسلم طلبہ نے ہی حاصل کی تھی۔ جے پوری کی ذہین نقوی ( دوسری کلاس) نے دوسری پوزیشن جبکہ زبیریہ ناگوری نے تیسری پوزیشن حاصل کی تھی۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز