جموں وکشمیر : محبوبہ کا 60 ہزار عارضی ملازمین کو مستقل کرنے کا اعلان، ایس آر او 202 کا نہیں ہوگا اطلاق

جموں وکشمیر حکومت نے مختلف سرکاری محکموں میں عارضی بنیادوں پر کام کرنے والے 60 ہزار ملازمین کو مستقل کرنے کا اعلان کردیا ہے۔

Dec 13, 2017 04:11 PM IST | Updated on: Dec 13, 2017 04:11 PM IST

سری نگر: جموں وکشمیر حکومت نے مختلف سرکاری محکموں میں عارضی بنیادوں پر کام کرنے والے 60 ہزار ملازمین کو مستقل کرنے کا اعلان کردیا ہے۔ ریاستی وزیر اعلیٰ محبوبہ مفتی نے مائیکرو بلاگنگ کی ویب سائٹ ٹویٹر پر اپنے ایک ٹویٹ میں کہا ’ہماری حکومت جموں وکشمیر کے مختلف سرکاری محکموں میں کام کررہے تقریباً ساٹھ ہزار ڈیلی ویجروں اور کیجول لیبروں کو پائیدار ذریعہ اور روزگار فراہم کے لئے انہیں مستقل نوکریاں فراہم کررہی ہے‘۔

مستقل کئے جانے والے ملازمین پر ایس آر او 202 کا اطلاق نہیں ہوگا جس کے تحت ملازمین کو پانچ سال تک صرف بیسک تنخواہ دی جاتی ہے۔ سرکاری ذرائع نے بتایا کہ مستقل کئے جانے والے ملازمین کے لئے ایک علیحدہ ایس آر او لایا جائے گا۔ ریاست میں خزانہ، محنت و روزگار کے وزیر ڈاکٹر حسیب احمد رابو نے بتایا کہ مختلف محکموں میں کام کرنے والے قریب 60 ہزار ملازمین کی نوکریاں اگلے ہفتے مستقل کی جائیں گی۔

جموں وکشمیر : محبوبہ کا 60 ہزار عارضی ملازمین کو مستقل کرنے کا اعلان، ایس آر او 202 کا نہیں ہوگا اطلاق

فائل فوٹو

انہوں نے بتایا کہ کابینہ نے اس سلسلے میں اکتوبر میں روڈ میپ مرتب کیا تھا۔ اس حوالے سے ایک نیا ایس آر او اگلے ایک ہفتے کے اندر سامنے لایا جائے گا‘۔ یہ پوچھے جانے پر کہ کیا ایس آر او 202 کا اطلاق مستقل ہونے والے ملازمین پر بھی ہوگاتو ڈاکٹر درابو کا جواب تھا ’نہیں۔ ان پر ایس آر او 202 کا اطلاق نہیں ہوگا۔ ان کے لئے ایک الگ ایس آر او مرتب کیا جائے گا‘۔ سی پی آئی (ایم) کے ممبر اسمبلی محمد یوسف تاریگامی نے عارضی ملازمین کی مستقلی میں ہوئی تاخیر پر مایوسی کا اظہار کیا ہے۔ تاریگامی نے یو این آئی کو بتایا ’میں مطمئن نہیں ہوں کیونکہ اس میں بہت تاخیر ہوئی ہے۔ کئی دوسرے طبقات کو نظرانداز کیا گیا ہے‘۔

Loading...

Loading...

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز