گجرات انتخابات میں الزامات سے پریشان منموہن سنگھ نے ونکیا نائیڈو سے شکایت کی

نئی دہلی۔ سابق وزیراعظم من موہن سنگھ نے گجرات انتخابات میں بھارتیہ جنتا پارٹی (بی جےپی) کو ہرانے کےلئے پاکستان کے ساتھ مل کر سازش کرنے کے الزامات کی شکایت چیئرمین ایم وینکئیا نائیڈو سے کی اور اس موضوع پر اپنی پریشانی بھی ان کو بتائی۔

Dec 19, 2017 04:46 PM IST | Updated on: Dec 19, 2017 04:46 PM IST

نئی دہلی۔ سابق وزیراعظم من موہن سنگھ نے گجرات انتخابات میں بھارتیہ جنتا پارٹی (بی جےپی) کو ہرانے کےلئے پاکستان کے ساتھ مل کر سازش کرنے کے الزامات کی شکایت چیئرمین ایم وینکئیا نائیڈو سے کی اور اس موضوع پر اپنی پریشانی بھی ان کو بتائی۔ راجیہ سبھا میں وقفہ سوال کے درمیان اپوزیشن کے لیڈر غلام نبی آزاد نے جب یہ موضوع اٹھایا کہ وزیراعظم نریندرمودی نے گجرات انتخابات کے دوران سابق وزیراعظم من موہن سنگھ ،سابق نائب صدر جمہوریہ حامد انصاری، سابق وزیرخارجہ نٹور سنگھ،سابق آرمی چیف دیپک کپور اور سابق خارجہ سکریٹری سلمان حیدر پر الزام لگایا کہ ان لوگوں نے مسٹر مودی کو ہرانے کےلئے کانگریس لیڈر منی شنکر ایئر کے گھر پر پاکستانی افسروں سے مل کر سازش کی ہے، اس لئے مسٹر مودی کو اس پر ایوان میں آکر معافی مانگنی چاہئے۔

اس پر چیئرمین مسٹر نائیڈو نے کہا کہ ایوان کی کارروائی چلنے کے لئے رکاوٹیں دور کی جانی ضروری ہیں اور اپوزیشن لیڈران کے ساتھ مل کر اس پر بات چیت کر کے راستہ نکالنا چاہئے۔ انہوں نے کہا کہ مسٹر سنگھ نے مجھ سے ملاقات کرکے اس مسئلے پر اپنے احساسات کا اظہار کیا ہے اور میں نے ان کی باتیں سنی ہیں۔

گجرات انتخابات میں الزامات سے پریشان منموہن سنگھ نے ونکیا نائیڈو سے شکایت کی

تصویر: یو این آئی

انہوں نے ایوان کےلیڈر ارون جیٹلی سے کہا کہ وہ اس مسئلے کو سلجھانے کےلئے اپوزیشن پارٹیوں کے لیڈران سے بات چیت کریں۔ اس پر مسٹر جیٹلی نے ایوان کو بتایا کہ وہ اپوزیشن کے ساتھ مل کر اس موضوع پر بات چیت کریں گے،ان کی بات سن کر مسٹر آزاد سمیت سبھی اپوزیشن لیڈر مطمئن ہوگئے۔ اس سے پہلے وقفہ سوال شروع ہونے پر قریب پندرہ منٹ تک من موہن سنگھ کا موضوع ایوان میں برقرار رہا اور برسراقتدار پارٹی اوار اپوزیشن کے درمیان کافی تکرار ہوئی۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز