شہید پرم جیت سنگھ کی آخری رسوم پورے فوجی اعزاز کے ساتھ ادا

ترن تارن۔ جموں و کشمیر کے کرشنا سیکٹر میں پاکستان کے مظالم کے شکار ہوئے سکھ ریجمنٹ کے نائب صوبیدار پرم جیت سنگھ کا جسد خاکی ان کے آبائی گاؤں پہنچا جہاں پورے احترام کے ساتھ ان کی آخری رسوم ادا کردی گئیں۔

May 03, 2017 10:17 AM IST | Updated on: May 03, 2017 10:18 AM IST

ترن تارن۔  جموں و کشمیر کے کرشنا سیکٹر میں پاکستان کے مظالم کے شکار ہوئے سکھ ریجمنٹ کے نائب صوبیدار پرم جیت سنگھ کا جسد خاکی  ان کے آبائی گاؤں پہنچا جہاں پورے احترام کے ساتھ ان کی آخری رسوم ادا کردی گئیں۔ ان کی چتا کو ان کے 12 سالہ بیٹے ساحل ديپ سنگھ نے آگ دکھائی۔ پرم جیت سنگھ سمیت دو فوجیوں کو جموں و کشمیر کے پونچھ ضلع میں بین الاقوامی کنٹرول لائن کے قریب پاکستان کی سیکورٹی فورسز نے گھات لگا کر قتل کر دیا تھا۔ پرم جیت سنگھ کے والد اودھم سنگھ، ان کی دو بیٹیاں، شہید کی بیوی اور بیٹا آج لاش گاؤں پہنچنے پر بلک اٹھے اور مطالبہ کیا کہ انہیں باپ کی مکمل لاش چاہئے۔ شہید کی لاش پہنچنے پر گاؤں کے لوگوں اور شہید پرم جیت سنگھ کی بیوی نے کہا کہ انہیں اپنے شوہر کی مکمل لاش چاہئے، مکمل لاش نہیں ملی تو آخری رسوم ادا نہیں کی جائیں گی۔

اس سے قبل جیسے ہی شہید کا جسد خاکی گاؤں پہنچا تو پورا گاؤں ان کے جسد خاکی کے آخری درشن کے لئے آپہنچا۔ ان لوگوں نے بھی مطالبہ کیا کہ گھروالوں کو شہید کی لاش دکھائی جائے، اس کے بعد ہی طے ہوگا کہ آخری رسوم ادا ہوں گی یا نہیں۔ گاؤں میں موجود تمام لوگ اس بات پر بضد ہوگئے تھے کہ لاش کا آخری درشن کئے بغیر آخری رسومات ادا نہیں کرنے دی جائے گی۔ اگرچہ موقع پر پہنچے ضلع انتظامیہ کے افسران کے سمجھانے کے بعد لواحقین مان گئے اور پھر شہید کو پورے فوجی اعزاز کے ساتھ آخری الوداعی دی گئی۔

شہید پرم جیت سنگھ کی آخری رسوم پورے فوجی اعزاز کے ساتھ ادا

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز