امریکہ کا یروشلم کو اسرائیل کی راجدھانی تسلیم کرنا اشتعال انگیز، ظالمانہ اورغرور پر مبنی فیصلہ : مولانا محمود مدنی

Dec 07, 2017 06:01 PM IST | Updated on: Dec 07, 2017 06:01 PM IST

نئی دہلی : جمعیۃ علماء ہند نے امریکی صدر ڈونالڈٹرمپ کے ذریعہ آج بیت المقد س کو اسرائیلی دارالحکومت تسلیم کرنے پرسخت احتجاج کیا ہے ۔ اس سلسلے میں جمعیۃ علما ء ہند کے جنرل سکریٹری مولانا محمود مدنی نے اپنے ایک بیان میں کہا ہے کہ یہ اشتعال انگیز فیصلہ ہے جس سے نہ صرف خطے میں بلکہ پوری دنیا کے مسلمانوں میں بے چینی پیدا ہو ئی ہے ۔

مولانا مدنی نے کہا کہ امریکہ عالمی قوانین اوربین الاقوامی خدشات کو نظر اندازکررہا ہے جس سے امن کے کوشاں ادارے مایوس ہوئے ہیں ۔ مولانا مدنی نے اقوام متحدہ سے مطالبہ کیا کہ وہ اس موضوع پر ہنگامی اجلاس طلب کرے اور خود کی متعدد منظور شدہ قرار داد کی روشنی میں القدس کی حیثیت کو برقرار رکھنے کے لیے ضروری قدم اٹھائے ۔انھوں نے اس سلسلے میں مشرق وسطی کے حکمرانوں کو بھی متوجہ کیا کہ وہ امریکہ سے اپنے تعلقات پر نظر ثانی کریں ۔

امریکہ کا یروشلم کو اسرائیل کی راجدھانی تسلیم کرنا اشتعال انگیز، ظالمانہ اورغرور پر مبنی فیصلہ : مولانا محمود مدنی

مولانا محمود مدنی: فائل فوٹو

مولانا مدنی نے استدلال کیا کہ یہ حقیقت اظہر من الشمس ہے کہ قبلہ اول پر مسلمانوں کا اولین حق ہے، نہ صرف فلسطین بلکہ پور اعالم اسلام اس سے دینی و جذباتی رشتہ رکھتا ہے، جس پر اسرائیل نے غاصبانہ طریقہ سے تسلط قائم کررکھا ہے ، سال گزشتہ یونیسکو اقوام متحدہ نے ایک تاریخی فیصلے میں مسجد اقصی اور دیوار براق پر مسلمانوں کا حق تسلیم کیا تھا ، اس لیے اقوام متحدہ کی ذمہ داری ہے کہ موجودہ حیثیت سے چھیڑ چھاڑ کرنے والوں پر لگام کسے ۔ انھوں نے کہا کہ جمعیۃ علما ء ہند قبلہ اول کے تحفظ کے لیے روز اول سے ہر جد وجہد میں شامل ہوتی رہی ہے، وہ ڈونالڈ ٹرمپ کے اس منصوبے پر سخت بے چین ہے اور اسے ظالمانہ اور غرور پر مبنی فیصلہ سمجھتی ہے ۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز