رمضان کے پیش نظر اناؤ کے لیگل سلاٹر ہاؤس سے کانپور میں گوشت کی ہوگی سپلائی

May 29, 2017 11:16 PM IST | Updated on: May 31, 2017 12:12 PM IST

کانپور(سندیپ سویتا ) اترپردیش میں بی جے پی کی حکومت آنے کے بعد سے ہی گلی اور محلوں میں چل رہے مذبح خانوں اورغیرقانونی سلاٹر ہاؤسوں کو بند کیے جانے کا سلسلہ شروع ہوگیا، جس گوشت کا کاروبار سے لے کر گوشت کھانے والے تمام لوگ متاثر ہوئے ہیں ۔ کانپورمیں تو یہ حالات ہیں کہ دو ماہ گزر جانے کے بعد بھی گوشت کا مسئلہ حل ہونے کی کوئی راہ نہیں نکل سکی ہے۔ لیکن ماہ رمضان کے پیش نظر ایک مسئلہ کو حل کرنے کی کوشش کی گئی ہے۔

کانپور شہرمیں ایک سلاٹر ہاؤس ہے ، جسے معیار کو پورا نہ کیے جانے کی وجہ سے دو ماہ قبل بند کر دیا گیا تھا ، جس کے بعد سے شہر کے گوشت کاروباری کافی پریشان ہیں ۔ جمعیت الحق قریش تنظیم نے انتظامیہ سے اس کا کوئی حل نکالنے کیلئے کئی مرتبہ مطالبہ کیا ۔ لیکن حکومت نے ایک نہیں سنی ۔ تاہم اب ماہ رمضان شروع ہونے پر اس مسئلہ کی نجات دلانے کیلئے ضلع انتظامیہ نے ایک راہ تلاش کی ہے ۔

رمضان کے پیش نظر اناؤ کے لیگل سلاٹر ہاؤس سے کانپور میں گوشت کی ہوگی سپلائی

کانپور سے نزدیک اناؤ شہر میں سات لیگل سلاٹر ہاؤس ہیں، جہاں سے گوشت بیرونی ملکوں میں بھیجا جاتا ہے ۔ اب یہیں سے کانپور کے کاروباریوں کو گوشت مہیا کرایا جائے گا ، جس کی قیمت مناسب رکھی جائے گی ۔اس فیصلہ کے بعد ایک میٹنگ کانپور کے گوشت كاروباريوں اور اناؤ کے سلاٹر ہاؤس مالكوں اور ضلع انتظامیہ کے افسران کے درمیان ہوئی ، جس میں سلاٹر ہاؤس مالكوں کو کم قیمت میں گوشت دینے کے لیے راضی کر لیا گیا ۔ ماہ رمضان کے پیش نظر سلاٹر ہاؤس مالکان بھی کم قیمت میں گوشت کی فراہمی کیلئے مان گئے ۔

تاہم میٹنگ میں اس بات پر طویل بحث ہوئی کہ گوشت کو ایک شہر سے دوسرے شہر تک منتقل کرنے میں موجودہ ماحول کو دیکھتے ہوئے کافی دقتوں کا سامنا کرنا پڑ سکتا ہے ، لیکن ضلع انتظامیہ کی کوششوں سے سلاٹر ہاؤس مالک گوشت کو کنٹینرز میں کانپور بھیجنے کے لیے تیار ہو گئے ہیں ۔ انتظامیہ کے اس اقدام سے کانپور میں فی الحال رمضان کے مہینے میں گوشت کی کمی نہیں ہوگی۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز