میٹرو کی ہیریٹیج لائن کا افتتاح ، جامع مسجد اور لال قلعہ گھومنے آنے والوں کو بڑی راحت

May 28, 2017 01:24 PM IST | Updated on: May 28, 2017 01:24 PM IST

نئی دہلی : شہری ترقیات کے مرکزي وزیر ایم وینکیا نائیڈو اور دہلی کے وزیر اعلی اروند کیجریوال نے آج دہلی میٹرو ریل کارپوریشن (ڈی ایم آر سی) کی آئی ٹی اوسے کشمیری گیٹ تک نو تعمیر ہیریٹیج لائن کا افتتاح کیا۔ دونوں لیڈروں نے میٹرو بھون میں ریموٹ کنٹرول سے اس ریلوے لائن کو مشترکہ طور پر ہری جھنڈی دکھائی۔ مسٹر نائیڈو نے کہا کہ اس سے دہلی اور آس پاس کے لوگوں کو آمد و رفت میں آسانی ہوگی۔ دہلی حکومت کے تعاون کے لئے انہوں نے وزیر اعلی کا شکریہ ادا کیا۔ انہوں نے کہا کہ مرکز اور دہلی حکومت کو مل کر دہلی کے لوگوں کے لئے کام کرنا چاہئے۔ انہوں نے کہا کہ اس سے دہلی میں سیاحت کو فروغ ملے گا اور تجارتی سرگرمیوں میں اضافہ ہوگا۔

پرانی دہلی کے مختلف تاریخی مقامات کے درمیان سے گزرنے کی وجہ سے دہلی میٹرو کی وائلیٹ لائن کے ضمنی لائن کو 'ہیریٹیج کوریڈور كا نام دیا گیا ہے۔ دہلی گیٹ سے کشمیری گیٹ تک اس لائن پر دہلی گیٹ، جامع مسجد اور لال قلعہ سمیت کل چار میٹرو اسٹیشن ہیں اور اس کی مجموعی لمبائی 5.17 کلومیٹر ہے۔ ہیریٹیج لائن پر سروس شروع ہونے سے مسافر محض ایک گھنٹے 13 منٹ میں ہی اسکورٹس مجیسر سے کشمیری گیٹ تک سفر کر سکیں گے۔

میٹرو کی ہیریٹیج لائن کا افتتاح ، جامع مسجد اور لال قلعہ گھومنے آنے والوں کو بڑی راحت

ہیریٹیج لائن کے آغاز سے کشمیری گیٹ اسٹیشن دہلی میٹرو کا سب سے بڑا اور ٹرپل انٹرچینج سہولت والا اسٹیشن بن جائے گا، جو میٹرو نیٹ ورک کے تین کوریڈور (وایلیٹ لائن کے ساتھ ریڈ لائن اور ایلو لائن) کو آپس میں جوڑے گا۔

ڈی ایم آر سی نے میٹرو کی تاریخ میں پہلی بار استعمال کے لئے لال قلعہ میں دو دروازے اور جامع مسجد میں دو باہر نکلنے کے دروازے پائیلٹ پروجیکٹ کے طورپر نصب کئے ہيں جن ' ڈریم گیٹس کہا جاتا ہے۔ انہوں نے کہا کہ مسافر ٹوکن اور اسمارٹ کارڈ کے علاوہ پے ٹی ایم کے ذریعے بار کوڈ ڈاؤن لوڈ کرکے لال قلعہ سے جامع مسجد تک کا سفر کر سکتے ہیں۔

دہلی میٹرو کا یہ کوریڈور انتہائی تاریخی اہمیت والے علاقوں سے گزر تا ہے،اس لئے ان اسٹیشنوں میں گزرے زمانے کی عظمت اور ثقافتی اہمیت کا مظاہرہ کرنے والے پینل اور فنکارانہ نمونے بھی لگائےگئے ہیں۔ ڈی ایم آرنے ان اسٹیشنوں پر فنکارانہ نمونوں کے لئے فن اور ثقافتی تنظیم انٹیک کے ساتھ معاہدہ کیا ہے۔ ' ڈریم گیٹ سسٹم اگر کامیاب ہوتا ہے تو اگلے دو تین ماہ میں اسے دیگر اسٹیشنوں پر بھی نصب کیا جائے گا۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز