یوپی میں ذبیحہ خانوں پرعائد پابندی کے خلاف مسلمانوں نے کیا سڑکوں پر اترنے کا فیصلہ

May 03, 2017 10:34 AM IST | Updated on: May 03, 2017 10:34 AM IST

الہ آباد۔ گذشتہ ایک مہینے سے سلاٹر ہاؤس بند ہونے سے گوشت کی فراہمی تقریباً معطل ہو گئی ہے ۔ گوشت کے کارو بار سے وابستہ ہزاروں افراد بے روز گار ہو گئے ہیں ۔ مسلم تنظیموں کا  کہنا ہے کہ اگر ریاستی حکومت نے جلد ہی سلاٹر ہاؤس کو کھولنے کا فیصلہ نہ کیا تو وہ سڑکوں پر نکل کر اپنا احتجاج درج کرائیں گی ۔ یو پی میں سلاٹر ہاؤس پر لگی پابندی کے خلاف اب لوگوں کے صبر کا پیمانہ لبریز ہونے لگا ہے ۔ مجلس اتحاد المسلمین نے یو پی حکومت کو خبر دار کیا ہے کہ وہ سلاٹر ہاؤس پر لگی پابندی کو جلد از جلد ختم کرے ۔ سلاٹر ہاؤس پر لگی پابندی کے خلاف ایم آئی ایم نے سڑکوں پر نکل کراب  احتجاج کی شروعات کردی ہے ۔

یو پی میں سلاٹر ہاؤس کو بند کئے جانے کو ایک مہینہ ہو گیا ہے ۔ ریاست کی یوگی سرکار نے ان سلاٹر ہاؤس کو یہ کہہ کر بند کر دیا تھا کہ یہ غیر قانونی طور سے چلائے جا رہے ہیں ۔ مسلم تنظیموں نے اب سلاٹر ہاؤس پر لگی پابندی کے خلاف سڑکوں پر آنے کا فیصلہ کیا ہے ۔ایم آئی ایم نے الہ آباد میں ڈی ایم آفس کے باہر احتجاجی مظاہرے سے اس کی شروعات کر دی ہے ۔ گذشتہ دنوں الہ آباد ہائی کورٹ نے ریاستی حکومت کو واضح  حکم دیا ہے کہ وہ تین ماہ کے اندر سلاٹر ہاؤس کو کھولنے کو یقینی بنائے لیکن ریاستی حکومت یا مقامی انتظامیہ نے اس سلسلے میں  ابھی تک کوئی قدم نہیں اٹھایا ہے ۔

یوپی میں ذبیحہ خانوں پرعائد پابندی کے خلاف مسلمانوں نے کیا سڑکوں پر اترنے کا فیصلہ

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز