بی ایچ یو۔ اے ایم یو سے نہیں ہٹیں گے ہندو۔ مسلم لفظ: مختار عباس نقوی

Oct 09, 2017 04:42 PM IST | Updated on: Oct 09, 2017 04:42 PM IST

نئی دہلی۔ بنارس ہندو یونیورسیٹی سے 'ہندو' اور علی گڑھ مسلم یونیورسٹی سے 'مسلم' لفظ ہٹانے کی یو جی سی پینل کی سفارش کو مرکزی وزیر مختار عباس نقوی نے مسترد کر دیا ہے۔ یو جی سی پینل نے دونوں مرکزی یونیورسٹیوں کا سیکولر معیار قائم رکھنے کے لئے ہندو اور مسلم لفظ ہٹانے کو کہا تھا، لیکن مرکزی وزیر مختار عباس نقوی کا کہنا ہے کہ ہندو اور مسلم لفظ کا فرقہ واریت سے کوئی لینا دینا نہیں ہے۔

مرکزی وزیر مختار عباس نقوی نے یو جی سی پینل کی رپورٹ کی سفارش مسترد کرتے ہوئے کہا کہ سیکولر ہونے کا معنی صرف ہندو۔ مسلم لفظ نہیں ہے۔ لوگوں کو اس طرح کی تشویش میں نہیں پڑنا چاہئے۔ وہیں، کانگریس سے سندیپ دکشت کا کہنا ہے کہ ہندو۔ مسلم لفظ ملک کی ثقافت کا حصہ ہے۔ اسے فرقہ واریت سے جوڑنا غلط ہے۔

بی ایچ یو۔ اے ایم یو سے نہیں ہٹیں گے ہندو۔ مسلم لفظ: مختار عباس نقوی

مرکزی وزیر مختار عباس نقوی : فائل فوٹو۔

دراصل، حال ہی میں یو جی سی کے آڈٹ میں یہ تجویز دی گئی تھی کہ علی گڑھ مسلم یونیورسٹی سے 'مسلم' اور بنارس ہندو یونیورسیٹی سے لفظ 'ہندو' کو ہٹا دینا چاہئے۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز