ڈی ایس پی ایوب پنڈت کی ہلاکت کا واقعہ انتہائی رنج دہ : میرواعظ عمر فاروق

Jun 23, 2017 06:06 PM IST | Updated on: Jun 23, 2017 06:08 PM IST

سری نگر: حریت کانفرنس (ع) کے چیئرمین اور متحدہ مجلس علماء جموں وکشمیر کے امیر میرواعظ مولوی عمر فاروق نے شب قدر کی رات کو سری نگر کے پائین شہر کے نوہٹہ علاقہ میں واقع تاریخی جامع مسجد کے باہر پیش آئے ڈپٹی سپرنٹنڈنٹ آف پولیس محمد ایوب پنڈت کی ہلاکت کے واقعے کو انتہائی افسوسناک قرار دیتے ہوئے کہا ہے کہ یہ واقعہ انتہائی رنج دہ ہے ، اجتماعی تشدد اورسرعام زیر چوب ہلاکت ہمارے اقدار اور مذہب سے باہر ہے ۔

انہوں نے کہاکہ ریاستی سرکار کی جانب سے یہاں عوام پر جو تشدد ڈھایا جا رہا ہے وہ بڑی حد تک اس طرح کے بے رحمانہ واقعے کے لئے ذمہ دار ہے کیونکہ پولیس کویہاں لوگوں پر انتہائی وحشیانہ طریقے سے تشدد ڈھانے کے لئے استعمال کیا جا رہا ہے جس کا ردعمل بھی وحشیانہ ہونے لگا ہے‘۔ میرواعظ نے کہا کہ یہ ہماری انتہائی اہم ذمہ داری ہے کہ ہم اپنے سماجی تانے بانے کو وحشیانہ ڈھنگ کا شکار نہ ہونے دیں اور اپنے بنیادی اقدار کی حفاظت کریں ۔ انہوں نے کہا’ اگرچہ ہم کو سرکار کے تشدد اور وحشیانہ پن جس کا ہمیں روز سامنا کرنا پڑتا ہے اور اپنے جوانوں اور بچوں کی گولیوں سے چھلنی اور جلی ہوئی لاشیں دیکھنی پڑتی ہیں تاہم اس وجہ سے ہم اپنی انسانیت اور اپنے اقدار کو گنوا نہیں سکتے ۔اگر ایسا ہوتا ہے تو پھر ان کے اور ہمارے درمیان کیا فرق رہ جا تا ہے ؟

ڈی ایس پی ایوب پنڈت کی ہلاکت کا واقعہ انتہائی رنج دہ : میرواعظ عمر فاروق

انہوں نے کہاکہ اس طرح کے واقعات ہماری تحریک اور مبنی برحق جدوجہد کے لئے انتہائی تقصان دہ ہیں‘ ۔ میرواعظ نے کہا کہ ہم حکومت ہندوستان سے لگاتار یہ مطالبہ کر رہے ہیں کہ مسئلہ کشمیر کو حل کرنے کے لئے مثبت اقدامات اٹھائے جائیں تاکہ کشمیر کے اندر اور سرحدوں پر انسانی جانوں کے اتلاف کو روکا جا سکے لیکن اس پر کوئی توجہ نہیں دی جا رہی ہے ۔ انہوں نے کہا کہ اگر حکومت ہندوستان حقیقت میں کشمیر کی المناک صورتحال کو ختم کرنا چاہتی ہے اور یہاں حقیقی امن لانا چاہتی ہے تو اسے اس مسئلے کو حل کرنے کے لئے مثبت اقدامات کی شروعات کرنی چاہئے۔

کشمیری عوام اور مزاحمتی قیادت ان کاوشوں کی یقیناحمایت کریں گے ۔ حریت چیئرمین نے کہا کہ حسب دستور ہندوستان کے پروپیگنڈہ میڈیا کے بڑے حصے نے مذکورہ واقعے کی آڑ میں مزاحمتی قیادت اور تحریک کے خلاف پرپگنڈہ مہم تیز کر دی ہے جس میں کذب بیانی کا سہارا لے کر حقائق کو توڑ مروڑ کر پیش کیا جا رہا ہے جو انتہائی قابل افسوس ہے۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز