Live Results Assembly Elections 2018

غالب گئے ہی کہاں ہیں.. وہ تو ہر ذہن اور زبان پر ہیں

ہندی سنیما میں غالب پر پہلی فلم بنی تھی مرزا غالب کے ہی نام سے سنہ انیس سو چون میں۔

Dec 27, 2017 11:57 AM IST | Updated on: Dec 27, 2017 11:58 AM IST

یہ نہ تھی ہماری قسمت کہ وصال یار ہوتا۔ اگر اور جیتے رہتے یہی انتظار ہوتا

ہزاروں خواہشیں ایسی کہ ہر خواہش پہ دم نکلے۔ بہت نکلے میرے ارمان، پھر بھی کم نکلے

غالب گئے ہی کہاں ہیں.. وہ تو ہر ذہن اور زبان پر ہیں

مرزا غالب

Loading...

کتنا مشکل ہے غالب پر بات کرنے کے لئے کوئی ایسا شعر منتخب کرنا جو اب تک نہ سنا گیا ہو، نہ کہا گیا ہو، نہ چنا گیا ہو۔

ایک صدی قبل اس دنیائے فانی سے کوچ کر گئے اس شاعر کے کلام آج بھی لوگوں کے ذہن اور ان کی زبان پر اس قدر چڑھے ہوئے ہیں کہ کچھ بھی ان سنا اور ان کہا سا نہیں لگتا۔ پھر رنگ منچ سے لے کر سنیما اور ٹیلی ویژن تک ان کی زندگی کے تانے بانے کو اتنی بار بنا گیا ہے کہ ان کی غیر موجودگی بھی کہیں نہ کہیں ان کے ہونے کی وکالت کرتی نظر آتی ہے۔

بھارت بھوشن بنے تھے غالب

ہندی سنیما میں غالب پر پہلی فلم بنی تھی مرزا غالب کے ہی نام سے سنہ انیس سو چون میں۔ اس میں بھارت بھوشن نے غالب کا کردار ادا کیا تھا۔ فلم کی موسیقی دی تھی غلام محمد نے۔ فلم کو لوگوں نے کافی پسند بھی کیا۔ بھارت بھوشن بھی غالب کے رول میں اچھے لگے۔ یہاں تک کہ پاکستان میں بھی انہیں وہی عزت ملی جو ہندوستان میں ملتی رہی ہے۔

بھارت بھوشن بھارت بھوشن

سنہ انیس سو اکسٹھ میں پاکستان میں بھی مرزا غالب پر اسی نام سے ایک فلم بنی۔ اس فلم کو ایم ایم بلو مہرا نے بنایا تھا۔ اس فلم میں پاکستانی فلم سپراسٹار سدھیر نے غالب کا رول نبھایا تھا اور نور جہاں ان کی معشوقہ بنی تھیں۔ یہ فلم 24 نومبر 1961 کو ریلیز ہوئی تھی۔ باکس آفس پر اسے اوسط کامیابی بھی ملی تھی۔

گلزار کا غالب

گلزار نے بھی 1988 میں مرزا غالب پر ایک سیریل بنائی تھی۔ یہ شو ڈی ڈی نیشنل پرآتا تھا اور کافی پسند بھی کیا گیا۔ نصیر الدین شاہ نے اس میں غالب کا کردار ادا کیا تھا۔ اس شو کے لئے غزلیں جگجیت سنگھ اور چترا سنگھ نے گائی تھیں۔

ٹی وی شو اور سنیما ہی نہیں، غالب کی زندگی کو نہ جانے کتنی بار رنگ منچ پر سجایا گیا۔ پارسی تھیٹر سے شروع کرتے ہوئے ہندوستانی تھیٹر کے دنوں تک مہدی صاحب کی تحریر کردہ ناٹکوں میں نہ جانے کتنی بار محمد ایوب نے غالب کا رول نبھایا۔

ہمانی دیوان کی تحریر

Loading...

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز