اترپردیش : عیسائی مشنری اسکول کا مسلم والدین کو فرمان ، اسکارف بندھوانا ہے تولڑکی کو مدرسہ میں پڑھائیں

اترپردیش کے بارہ بنگکی میں ان دنوں ایک مشنری اسکول کی پرنسپل ارچنا ٹھامس کا ایک حکم نامہ موضوع بحث بنا ہوا ہے ۔

Nov 24, 2017 12:06 AM IST | Updated on: Nov 24, 2017 12:06 AM IST

بارہ بنکی : اترپردیش کے بارہ بنگکی میں ان دنوں ایک مشنری اسکول کی پرنسپل ارچنا ٹھامس کا ایک حکم نامہ موضوع بحث بنا ہوا ہے ۔ یہاں اسکول میں ساتویں کلاس میں پڑھنے والی ایک لڑکی سر پر اسکارف باندھ کر پہنچی تو اسکول انتظامیہ نے اس کے والدین کو تحریری فرمان جاری کیا کہ بچے کو کسی اسلامک اسکول میں داخل کرادیں۔

معاملہ بارہ بنکی کے نگر کوتوالی علاقہ کے عیسائی مشنری اسکول آنند بھون کا ہے ۔ اس اسکول میں اپنی لڑکی کو پڑھانے والے مولانا محمد رضا رضوی نے ایک دن بیٹی کو سر پر اسکارف باندھ کر بھیج دیا تھا ۔ اس پر انتظامیہ نے اعتراض کیا ہے۔

اترپردیش : عیسائی مشنری اسکول کا مسلم والدین کو فرمان ، اسکارف بندھوانا ہے تولڑکی کو مدرسہ میں پڑھائیں

طالبہ کو دوبارہ اسکار نہ باندھ کر آنے کیلئے کہا گیا ۔ اس کے بعد جاب والدین نے معاملہ میں اسکول سے سوال پوچھا تو اسکول انتظامیہ نے خط لکھ کر والدین کو ہدایت دی کہ مستقبل میں اس معاملہ پر خط و کتابت نہ کریں اور اگر کوئی پریشانی ہے تو اپنی لڑکی کا داخلہ کسی اسلامک اسکول میں کروا دیں۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز