تین طلاق بل سے کچھ بھی خطرے میں نہیں ، اگر کچھ ہے تو وہ مردوں کی زبردستی خطرے میں ہے : ایم جے اکبر

پارلیمنٹ کے لوک سبھا میں آج تین طلاق سے متعلق بل پیش کیا گیا ۔ مرکزی وزیر قانون نے اس بل کو تاریخی قرار دیا ہے اور مرکزی وزیر مملکت ایم جے اکبر نے اس کی پرزور حمایت کی ہے ۔

Dec 28, 2017 07:30 PM IST | Updated on: Dec 28, 2017 07:34 PM IST

نئی دہلی : پارلیمنٹ کے لوک سبھا میں آج تین طلاق سے متعلق بل پیش کیا گیا ۔ مرکزی وزیر قانون نے اس بل کو تاریخی قرار دیا ہے اور مرکزی وزیر مملکت ایم جے اکبر نے اس کی پرزور حمایت کی ہے ۔ ایم جے اکبر کا کہنا ہے کہ اس بل سے کچھ بھی خطرے میں نہیں ہے ، اگر کچھ خطرے میں ہے تو وہ مردوں کی زبردستی خطرے میں ہے۔

پارلیمنٹ میں مباحثہ میں شرکت کرتے ہوئے ایم جے اکبر نے مسلم پرسنل لا بورڈ پر بھی تیکھا حملہ کیا ۔ انہوں نے کہا کہ مسلم پرسنل لا بورڈ کتنا قابل اعتماد ہے۔ سماج کا نمائندہ بننے کیلئے انہیں کون منتخب کرتا ہے ، ہندوستان کو تقسیم کرنے کیلئے آزادی سے پہلے اسلام خطرے میں نعرے کا استعمال کیا گیا اور اب سماج کو توڑنے کیلئے اس کا استعمال کیا جارہا ہے ۔ زہر پھیلا جارہا ہے۔

تین طلاق بل سے کچھ بھی خطرے میں نہیں ، اگر کچھ ہے تو وہ مردوں کی زبردستی خطرے میں ہے : ایم جے اکبر

ایم جے اکبر

انہوں نے کہا شاہ بانوں کیس کا تذکرہ کرتے ہوئے کہا کہ شاہ بانوکو مینٹیننس کے 127 روپے تھے صرف ، لیکن اس کے بھی ملک بھر میں ہنگامہ ہوگیا ۔ انہوں نے مزید کہا کہ یہ قانون طلاق کے خلاف نہیں ہے بلکہ تین طلاق کے خلاف ہے ۔ ہم یہ نہیں کہتے کہ اس قانون سے سب کچھ بدل جائے گا ، لیکن ایک کہا ہے کہ آدرش کی تلاش میں کبھی اچھائی کو برباد مت کرو۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز