ڈیرا چیف: موبائل ڈیٹا / انٹرنیٹ سروس بند، ہریانہ کو 18 مزید کمپنیاں دی گئیں

ہریانہ میں سرسا واقع ڈیرہ سچا سودا کے سربراہ گرمیت رام رحیم سنگھ کی پنچكولا کی مرکزی تفتیشی بیورو (سی بی آئی) عدالت میں عصمت دری سے منسلک معاملے میں کل پیشی اور فیصلہ آنے کے پیش نظر لااینڈ آرڈر برقرار رکھنے کیلئے ہریانہ، پنجاب اور چنڈی گڑھ میں موبائل ڈیٹا اور انٹرنیٹ خدمات پر فوری اثر سے پابندی لگا دی گئی ہے۔

Aug 24, 2017 05:37 PM IST | Updated on: Aug 24, 2017 05:37 PM IST

چنڈی گڑھ ۔ ہریانہ میں سرسا واقع ڈیرہ سچا سودا کے سربراہ گرمیت رام رحیم سنگھ کی پنچكولا کی مرکزی تفتیشی بیورو (سی بی آئی) عدالت میں عصمت دری سے منسلک معاملے میں کل پیشی اور فیصلہ آنے کے پیش نظر لااینڈ آرڈر برقرار رکھنے کیلئے ہریانہ، پنجاب اور چنڈی گڑھ میں موبائل ڈیٹا اور انٹرنیٹ خدمات پر فوری اثر سے پابندی لگا دی گئی ہے۔

پنجاب کے گورنر اور چنڈی گڑھ کے ایڈمنسٹریٹر وی پی سنگھ بدنور کی صدارت میں یہاں راج بھون میں ہریانہ، پنچاب اور چنڈی گڑھ کے سینئر انتظامی افسران و پولس افسران کی چیف ایڈمنسٹریشن کمیٹی کے اجلاس میں یہ فیصلہ کیا گیا۔

ڈیرا چیف: موبائل ڈیٹا / انٹرنیٹ سروس بند، ہریانہ کو 18 مزید کمپنیاں دی گئیں

ڈیرہ حامیوں کو روکنے کے لئے پنچولہ آنے کے اہم راستوں پر رکاوٹ لگانے کے ساتھ ساتھ بڑی تعداد میں سیکورٹی فورسز کی تعیناتی کی گئی ہے لیکن وہ دیگر چھوٹے راستوں سے یہاں تک پہنچ رہے ہیں ۔

ایڈیشنل چیف سکریٹری رام نیواس نے کہا کہ اجلاس میں فیصلہ یہ بھی کیا گیا ہے کہ پنجاب اور ہریانہ اپنے اپنے یہاں فسادات کنٹرول کرنے والی سیل قائم کریں گے، جہاں دونوں ریاستوں کا ایک ایک پولیس افسر تعینات کیا جائے گا۔ مسٹر رام نیواس نے کہا کہ ریاست کو مرکز کی جانب سے 18 کمپنیاں دی گئی ہیں جو شام تک پنچکولہ پہنچ جا ئیں گی۔ انہیں صرف پنچکولہ میں ہی تعینات کیا جائے گا۔ اس سے قبل، ریاستی حکومت کو نیم فوجی دستوں کی 43 کمپنیاں ملی تھیں جنہیں حساس مقامات پر تعینات کردیا گیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ ریلوے وزارت کو ایک خط لکھ کر چنڈی گڑھ آنے والی تمام ٹرینوں کو آئندہ دو دنوں تک ملتوی کرنے کی درخواست کی گئی ہے۔ حکم امتناعی کے نفاذ کے باوجود، ڈیرہ کی حمایت کرنے والوں کی ایک بڑی تعداد کے پنچکولہ تک پہنچنے کے سوال پر انہوں نے کہا کہ حکم امتناعی کی پہلے جاری کئے گئے نوٹیفیکیشن میں اسلحہ ساتھ نہیں رکھنے کی بات کہی گئی تھی لیکن اب اس میں ترمیم کردی گئی ہے۔ انہوں نے کہا کہ ڈیرہ حامیوں کو روکنے کے لئے پنچولہ آنے کے اہم راستوں پر رکاوٹ لگانے کے ساتھ ساتھ بڑی تعداد میں سیکورٹی فورسز کی تعیناتی کی گئی ہے لیکن وہ دیگر چھوٹے راستوں سے یہاں تک پہنچ رہے ہیں ۔

مسٹر رام نواس کے مطابق پنچکولہ میں لااینڈ آرڈر قائم رکھنے کے لئے اور کسی بھی ہنگامی حالت سے نمٹنے کے لئے اور ناگزیر فیصلہ لینے کے لئے دوایڈیشنل ڈائرکٹر جنرل آف پولس سطح کے افسران ، 10 ڈیوٹی مجسٹریٹوں اور 10 دیگر آئی پی ایس افسران تعینات کیے گئے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ حکومت ہر حالت میں لااینڈ آرڈر کو یقینی بنائے گی اور سیکورٹی فورسز کو کسی بھی صورت حال سے نمٹنے کے لئے پوری طرح تیار رکھا گیا ہے۔ ہوم سیکرٹری کے مطابق، پولیس اور سیکورٹی فورسز ریاست کے تمام حساس مقامات پر گشت اور فلیگ مارچ کر رہے ہیں ۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز