مسلم لڑکیوں کو 51000 شادی شگون دے گی مودی سرکار، اقلیتی وزارت نے دی منظوری

Oct 13, 2017 05:53 PM IST | Updated on: Oct 13, 2017 05:53 PM IST

نئی دہلی۔ وہ مسلم لڑکیاں جو شادی سے قبل گریجویشن کر لیں گی، انہیں اب مودی حکومت کی طرف سے 51000 شادی شگون ملے گا۔ یہ تجویز مولانا آزاد ایجوکیشن فاؤنڈیشن کی طرف سے پیش کی گئی تھی، جس کو اقلیتی امور کی وزارت نے منظور کر لیا ہے۔ اس اسکیم کا مقصد مسلم لڑکیوں میں اعلی تعلیم کی سطح میں اضافہ کرنا ہے۔ جو طالبات مولانا آزاد ایجوکیشن فاؤنڈیشن کے ذریعہ بیگم حضرت محل اسکالرشپ لے رہی ہیں وہ اس کے لئے درخواست دے سکتی ہیں۔

اقلیتی لڑکیوں کو اسکالر شپ دینے والی اسکیم کا آغاز واجپئی حکومت نے 2003 میں کیا تھا، لیکن اس وقت تک صرف بارہوں کلاس تک کی ہی اقلیتی لڑکیوں کو وظیفہ دیا جاتا تھا۔ یہ تجویز جولائی میں اقلیتی معاملوں کی وزارت کو بھیجی گئی تھی۔ مولانا آزاد ایجوکیشن فاؤنڈیشن کے شاکر حسین انصاری نے کہا کہ ابھی تک مسلم لڑکیوں کے والدین اس الجھن میں ہوتے تھے کہ وہ اپنی لڑکیوں کو آگے پڑھائیں یا ان کی اسی پیسہ سے شادی کر دیں۔ فاؤنڈیشن اب شادی شگون کے نام سے ایک ویب ویب پورٹل بنانے پر غور کر رہا ہے، جو اس اسکیم سے متعلق تمام معلومات دستیاب کرائے گا۔

مسلم لڑکیوں کو 51000 شادی شگون دے گی مودی سرکار، اقلیتی وزارت نے دی منظوری

مسلم لڑکیاں: تصویر محض علامتی ہے۔

تاہم جن طالبات کے والدین کی آمدنی سالانہ 2 لاکھ سے زائد ہے انہیں اس اسکیم کا فائدہ نہیں ملے گا۔ اس اسکیم کا بنیادی مقصد یہ ہے کہ والدین اپنی لڑکیوں کی شادی کے بجائے ان کی تعلیم پر توجہ دیں۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز